فاٹا خاصہ دار فورس اہلکاروں اور صوبیداروں کا ایک اہم اجلاس

فاٹا خاصہ دار فورس اہلکاروں اور صوبیداروں کا ایک اہم اجلاس

خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)فاٹا خاصہ دار فورس اہلکاروں اور صوبیداروں کا ایک اہم اجلاس پشاور باغ ناران میں منعقد ہوئی اجلاس میں فاٹاسے تعلق رکھنے والے سینکڑوں خاصہ دار فورس کے اہلکاروں نے شرکت کی اجلاس میں متفقہ طور پر 80رکنی کمیٹی بنائی گئی جس میں فاٹاکے ہر تحصیل سے چار اور پانچ اہلکار شامل ہیں اور 25دسمبر کو دوبارہ پشاور باغ ناران میں اجلاس منعقد کرنے کا اعلان کیا جسمیں گورنر خیبر پختونخوا اور اعلی حکام سے ملاقاتیں کرنے کیلئے لائحہ عمل تیا رکیا جائے گا اجلا س سے خطاب کر تے ہو ئے صوبیدرا میجر جلال وزیر ،جہانگیر آفریدیاور مظہر آفریدی نے کہا کہ انکا فاٹا انضمام یا الگ صوبے سے کو ئی سروکار نہیں ہے لیکن فاٹامیں خاصہ دار فورس کی قربانیوں کو قدر کی نگا ہ دیکھا جائے کیونکہ خاصہ دار فورس نے سخت اور کھٹن حالات میں ملک اور اس مٹی کی حفاظت کیلئے جانوں کی نذرانے پیش کئے ہیں انہوں نے کہا کہ خاصہ دار فورس کم وسائل سے امن اومان برقرار رکھنے کیلئے کردار ادا کر رہے ہیں اگر وسائل فراہم کئے گئے تو کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے انہوں نے کہا کہ تمغہ شجاعت پانے والے خاصہ دار فورس کے اہلکاروں اور صوبیداروں کو فارغ ہونے کی باتیں ہو رہیں ہیں فاٹا میں تقریبا 28000خاصہ دار ڈیوٹیاں سرانجام دے رہے ہیں تو پھر یہ کہا جائیں گے اور ہر خاصہ دار اہلکار اپنے خاندان کا واحد کفیل ہو تاہیں صوبیداروں نے کہا کہ انکے پندرہ اور بیس سال سروس ہیں فارغ ہونے کے بعد سب قربانیاں اور خدمات ضائع ہو جائیں گے اسلئے حکومت خاصہ دار فورس کے بارے میں جو بھی فیصلہ کر تے ہیں وہ خاصہ دار فورس کے مشکلات کو دیکھ کر کریں انہوں نے کہا کہ اس مٹی اور اپنے ملک پاکستان کیلئے پہلے بھی قربانیاں دی ہیں اور اب بھی کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے آخر میں سینکڑوں خاصہ داروں اور صوبیداروں نے پاکستان زندہ باد کے نعرے بھی لگائے

مزید : پشاورصفحہ آخر