سردیوں میں گرم اشیاء کازیادہ استعمال نقصان دہ ہے،ڈاکٹر نثار

سردیوں میں گرم اشیاء کازیادہ استعمال نقصان دہ ہے،ڈاکٹر نثار

تلہ گنگ (تحصیل رپورٹر)تلہ گنگ الممتاز ہسپتال کے چیف ایگز یکٹوچا ئلڈ و جنر ل فز یشن ڈاکٹر نثا ر ا حمد ملک نے میڈ یا بیان میں کہا ہے کہ سردیوں میں نزلہ ،زکام ، کھانسی اور بخار جیسی امراض سے بچنے کے لیے گرم کپڑوں کا استعما ل کیا جائے جبکہ صبح کی سیرکی بجائے اگرشہری ظہر اور عصر کے درمیان سیر کیا کریں تو انکی صحت پر اچھے اثرات مرتب ہونگے کیونکہ اس وقت سردی بھی کم ہوتی ہے اور دھوپ سے انسان وٹامن ڈی بھی حاصل کرتا ہے جس سے ہڈیاں مضبوط ہوتی ہیں ۔ڈاکٹر نثار احمد ملک کا مزید کہنا تھا کہ سردیوں کے موسم میں گرم اشیاء اور ڈرائی فروٹ کا زیادہ استعمال بھی نقصان دہ ہو سکتا ہے جس سے بلڈ پریشر اور معدہ خراب ہوسکتا ہے اس لیے خشک میوہ جات ،لحمیات اور پروٹین کا استعمال ایک مقررہ مقدار سے زیادہ نہ کیا جائے اور سردیو ں کے موسم میں بزرگ اور بچوں کو خاص احتیاط کی ضرورت ہے اور انہیں سردی سے بچنے کیلئے خاص اہتمام کیا جائے کیونکہ ان عمروں میں نمونیے کا خطرہ زیادہ لاحق ہوتا ہے ، سردیوں کے موسم میں موٹر سائیکل سوار ہیلمنٹ کا استعمال ضرور کریں تاکہ انکا ناک ،کان اور سر ٹھنڈی ہوا سے محفوظ رہ سکے ا اور بلخصوص دل کے مریض اچانک سردی میں نہ نکلیں جس سے انکی چھاتی خراب ہوسکتی ہے ۔چائلڈاینڈ جنرل فزیشن نے مز ید کہا کہ سردیوں کے موسم میں جوڑوں اور جسم کے مختلف حصوں کے دردوں سے محفوظ رہنے کیلئے گرم کپڑوں کا استعمال کرنے کے ساتھ ساتھ کالے چنوں کا شوربہ اور دیسی مرغی کا استعما ل زیادہ کیا جائے ،سردیوں کے موسم میں خاص طور پر بزرگوں کو ٹھنڈے پانی اور ٹھنڈے مشروبات سے پرہیز کرنا چاہئے، کھانے میں برائلر کے گوشت کی بجائے دیسی مرغی کا گوشت استعمال کیا جائے مچھلی ، کالے چنے کے شوربے کا استعمال بھی جسم کیلیے فائدہ مند ہے ، پاؤں میں جرابوں کے ساتھ سر کو بھی ڈھانپا جائے اور دھوپ کا استعمال اپنی زندگی میں داخل کرلیں جو جسم کو وٹا من ڈی فراہم کرتی ہے جس سے جسم کی ہڈیاں مضبوط ہوتی ہیں جسمانی دردوں سے بچنے کیلیے سب سے اہم بات یہ کہ اپنے جسم میں یورک ایسڈ کو بڑھنے نہ دیں جو جسمانی دردوں کا باعث بنتا ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...