جھلکیاں ( محمد سعید مکول ،طارق انصاری ،احمد رضا سیال سے )

جھلکیاں ( محمد سعید مکول ،طارق انصاری ،احمد رضا سیال سے )

*پاکستان پیپلز پارٹی کے ملتان کے جلسہ کیلئے دو بجے کا وقت دیا گیا تھا مگر مذکورہ وقت پر پنڈال خالی تھا ۔

* پنڈال میں شرکاء کی آمد کا سلسلہ تین بجے کے بعد شروع ہوا ۔

* سٹیج سے شرکاء کو گیٹوں پر روکنے کے اعلانات کئے جارہے تھے مگر اس وقت داخلی راستوں پر رش ہی نہیں تھا ۔

* جلسہ گاہ میں گنتی کے چند تشہری ہورڈنگ لگائے گئے تھے جس پر ہورڈنگ بنوانے والوں نے صرف اپنے آپ کو نمایاں رکھنے کا خیال رکھا تھا ۔

* جلسہ گاہ کے اردگرد اور سرکلرروڈ پر پیپلز پارٹی کا ایک بھی جھندا نظر نہ آیا ۔

* پارٹی ترانوں اور ملی نغموں کیلئے ملک کے معروف ڈی جے کی خدمات حاصل کی گئی تھیں ۔

* جلسہ گاہ میں شرکاء کے بیٹھنے کیلئے گیارہ ہزار چار سو کرسیاں لگائی گئی تھیں۔

* جلسہ کیلئے ہونے والی تشہری مہم گیلانی خاندان پر مشتعمل نظر آئی ۔

* جلسہ گاہ میں سٹیج کو دو کیٹگریز میں تقسیم کیا گیا تھا ایک طرف مرکزی عہدیدار اور اراکین اسمبلی و دیگر عمائدین بیٹھے تھے جبکہ دوسری جانب مختلف تنظیمی عہدیداروں کو بٹھایا گیا تھا۔

* پارٹی ترانوں اور لوگ گیتوں پر جیالیاں اور جیالے جھومتے اور بھنگڑے ڈالتے رہے ۔

* گلو کار عارف لوہار، ساجد ملتانی ،احمد نواز چھینہ نے اپنی پرفارمنس سے شرکاء کا جوش گرمایا ۔

* جلسہ گاہ میں ڈرون شرکاء کی توجہ کا مرکز بنے رہے ۔

* بلاول بھٹو زرداری سمیت مرکزی قیادت 5بجکر 50منٹ پر جلسہ گاہ پہنجی ۔

* جلسہ کے بیشتر قائدین نے اپنی تقریریں سرائیکی زبان میں کیں ۔

* سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی تقریر کیلئے مین ڈائس پر آئے تو مائیک خراب ہونے سے آواز کم پڑ گئی جسے ہنگامی بنیادوں پر ٹھیک کیا گیا ۔

* سٹیج سیکرٹری کے فرائض پارٹی رہنما نتاشا دولتانہ اور ڈاکٹر جاوید صدیقی نے انجام دئیے ۔

* سٹیج پر مرکزی قائدین کے خطاب کیلئے لگائے گئے مین ڈائس پر پہلے بلٹ پروف شیشہ لگایا گیا تھا جسے بعد میں ہٹا دیا گیا۔

* قلعہ کہنہ قاسم باغ میں خواتین کارکنان کے لیے بھی ا لگ سے انتظامات کیے گئے تھے۔

* سٹیج پر بھی قائدین کے لیے وی آئی پی صوفے اور کرسیاں لگا دی گئیں۔

* جلسہ گاہ کے سٹیج کے گرد تاریخی تصاویر نصب کی گئی تھیں تصاویر میں ذوالفقار علی بھٹو کی دورہ ملتان کی تصاویر بھی موجود تھیں۔

* سٹیج پر داخلے کے لئے 184افراد کو پاسز جاری کئے گئے تھے

مزید : کراچی صفحہ اول