کمزور اور شریف لوگوں کے لئے ایسا وظیفہ جو انہیں لوگوں کی گالیوں اور زیادتی سے بچا سکتا ہے

کمزور اور شریف لوگوں کے لئے ایسا وظیفہ جو انہیں لوگوں کی گالیوں اور زیادتی سے ...
کمزور اور شریف لوگوں کے لئے ایسا وظیفہ جو انہیں لوگوں کی گالیوں اور زیادتی سے بچا سکتا ہے

  

بدکلامی اور گالیاں دینے کی عادت ہمارا قومی مزاج بن گیا ہے۔بازاروں میں تو ایک جانب گھروں اور دفتروں میں بھی یہی رویہ عام ہے اور شریف و نرم لوگ اس سے عاجز آجاتے ہیں ۔بہت سے لوگوں نے تو اس کو معمول بنا لیا ہے کہ کسی سے کام لینا ہے تو گالیاں دیا کرو،گالی دینا مسلمان کی شان نہیں۔ ان حالات میں کمزور اور شریف لوگ یَا مُذِلُّ کو40دن تک 1170مرتبہ پڑھنا اپنا معمول بنا لیں تو ان شاء اللہ گالی گلوچ اور ذلیل کرنے والوں کو منہ کی کھانی پڑے گی ۔ یَا مُذِلُّ رب الکریم کا صفاتی اسم ہے ۔

صوفیا کرام کا کہنا ہے کہ یَا مُذِلّ کے لغوی معنی ہیں ’’اے ذلیل کرنے والے‘‘۔ قرآن عظیم الشان میں آتا ہے کہ اللہ تعالیٰ جسے چاہے عزت دے اور جسے چاہے ذلت دے مگر انسان کو اس سے بھلائی کی توقع کرنی چاہئے کیونکہ وہ ذات ہر چیز پر قدرت رکھتی ہے۔ لہذا اگر کسی کو افسر بالا سے یاکسی دشمن سے اپنی اور اپنے بچوں کی جان و رزق کا خطرہ ہو تو اسے چاہئے کہ اس اسم پاک کا وظیفہ مکمل کرنے کے بعد بھی اسکو اپنی تسبیح بنا کر رکھے تو تمام عمر ذلت و خواری سے بھی محفوظ رہے گا،اس کی عزت بڑھے گی۔

مزید : روشن کرنیں