دنیا کے سب سے بڑے مسلمان ملک کی عدالت نے شادی کے بغیر جنسی تعلق پر پابندی لگانے سے انکار کر دیا

دنیا کے سب سے بڑے مسلمان ملک کی عدالت نے شادی کے بغیر جنسی تعلق پر پابندی ...
دنیا کے سب سے بڑے مسلمان ملک کی عدالت نے شادی کے بغیر جنسی تعلق پر پابندی لگانے سے انکار کر دیا

  

جکارتہ (مانیٹرنگ ڈیسک) انڈونیشیا کی آئینی عدالت نے مسلم دنیا کی عدالتی تاریخ کا حیران کن ترین فیصلہ دیتے ہوئے ناجائز جنسی تعلقات کو غیر قانونی قرار دینے سے انکار کر دیا ہے ۔

ویب سائٹ ’فرانس24 ‘ کے مطابق عدالت کے9 میں سے 5 ججوں نے شادی کے بغیر استوار کیے جانے والے جنسی مراسم اور حتیٰ کہ ہم جنس تعلقات کو بھی خلاف ِ قانون قرار دینے سے انکار کر دیا ہے ۔ ہم جنس پرستوں کے حقوق کیلئے کام کرنے والی تنظیمیں یہ فیصلہ سن کر خوشی سے جھوم اٹھی ہیں۔ ایک ایسی ہی تنظیم کے کارکن ہارف طوئیو کا کہنا تھا ” یہ صرف ہمارے لیے ہی نہیں بلکہ ساری دنیا کے ہم جنسوں پرستوں کیلئے ایک بڑی خبر ہے۔ ہم سب کو اپنی زندگی اپنی مرضی کے مطابق گزارنے کا حق ہونا چاہیے اور عدالت نے ہمارے اسی حق کو تسلیم کیا ہے ۔ “

یاد رہے کہ امریکا میں ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی قرار دیئے جانے کے بعد انڈونیشیا میں بھی ہم جنس پرست تنظیموں نے ایسا ہی مطالبہ شروع کر دیا تھا۔ ان کے بڑھتے ہوئے مطالبات سے پریشان ہو کر ایک مذہبی گروپ کی جانب سے عدالت میں درخواست دائر کی گئی تھی کہ شادی کے بغیر جنسی تعلقات اور ہم جنس پرستی کے متعلق ملک کی اعلیٰ ترین عدالت فیصلہ صادر کرے، لیکن کسی کے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ فیصلہ ہم جنس پرستوں کے حق میں ہی آجائے گا۔

مزید : بین الاقوامی