آرمی پبلک سکول پشاور کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا:اسد قیصر

 آرمی پبلک سکول پشاور کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا:اسد قیصر
 آرمی پبلک سکول پشاور کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا:اسد قیصر

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے سانحہ آرمی پبلک سکول پشاور میں شہید ہونے والے بچوں کو خراج عقیدت  پیش کرتے ہوے کہا ہے کہ ان بچوں کی قربانیوں کو کبھی نہیں بھلایا جا سکتا، 16دسمبر 2014 کے دن کو پاکستان کی تاریخ میں سیاہ ترین دن کے طور پر یاد رکھا جائے گا پوری قوم ان غمزدہ خاندانوں کے غم میں برابر کی شریک ہے،دہشتگرد کا کوئی مذہب نہیں اور اس کے سدباب کے لیے ہم سب کو مل کر جدوجہد کرنا ہوگی، ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے لیے سب کو مشترکہ کوششیں کرنا ہونگی۔

آ ج  سانحہ آرمی پبلک اسکول کی پانچویں برسی کے موقع پر جاری اپنے ایک بیان میں انھوں نے کہا کہ سانحہ اے پی ایس  کے واقعہ  میں 132 سے زیادہ بچوں اور اساتذہ کی شہادت نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیاتھا ۔  آرمی پبلک سکول کے ان معصوم چھوٹے چھوٹے ہیروز نے ہمارے ی پیغام چھوڑ کر گئے ہیں کہ  وہ دہشت گردی سے پاک اور تعلیم یافتہ پاکستان کے لئے کھڑے ہوں۔اسپیکر نے کہا کہ پانچ  سال بعد بھی سانحہ اے پی ایس ناقابل برداشت درد کی موجودگی کو ظاہر کرتا ہے ۔ہمیں ان خاندانوں پر  فخر جنہوں نے اس عظیم صدمے کو برداشت کیا  ہے ۔   پوری قوم ان غمزدہ خاندانوں کے غم میں برابر کی شریک ہے۔سپیکر نے سانحہ اے پی ایس کے  معصوم بچوں کے ضیاع کو ایک بہت بڑا قومی نقصان قرار دینے ہوئے کہا کہ  پاکستان کی تاریخ میں اے پی ایس کے  معصوم ہیروز  کی قربانی ہمیشہ یاد رکھا جائے گا،سانحہ آرمی پبلک سکول آج بھی ہمارے دل میں روز اول کی طرح تازہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وہ موقع  تھا  جب  پوری قوم دہشتگردی کہ خلاف متحد ہو گئی اور ہماری مسلح افواج نے پوری قوم کی مدد سے دہشتگردی  کا قلع قمع کرنے کا اعادہ کیا  جس کے نتیجہ میں آج ملک سے کافی حد تک  دہشتگردی کا خاتمہ ہو چکا ہے۔انہوں نے  کہا کہ ہماری مسلح افواج  نے  دہشتگردی کے خلاف جنگ میں لازوال قربانیاں  دی ہیں جنہیں فرموش نہیں کیا جا سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں  دہشتگردی  کے  ہمیشہ کے خاتمے کے لیے تعلیم کو اپنی میراث بنانے کی ضرورت ہے ۔سپیکر نے اس عزم کا اظہار کیا کہ سانحہ آرمی پبلک اسکول میں شہید ہونے والے بچوں کے خون کو کبھی رائیگاں نہیں  جانے دینگے اور آخری دہشتگرد کے خاتمے تک جنگ جاری رکھی جائے  گی۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگرد کا کوئی مذہب نہیں اور اس کے سدباب کے لیے ہم سب کو مل کر جدوجہد کرنا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے لیے سب کو مشترکہ کوششیں کرنا ہونگی۔

مزید : قومی