سرکاری ملازمین، اساتذہ کا پھر احتجاجی تحریکیں چلانے کا اعلان

سرکاری ملازمین، اساتذہ کا پھر احتجاجی تحریکیں چلانے کا اعلان

  



لاہور(خبرنگار) پنجاب بھر کے سرکاری ملازمین نے مطالبات کی منظوری کے لئے 17 دسمبر کو ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر آنے کا اعلان کر دیاہے اور ایوانِ وزیر اعلیٰ کے گھیراؤ کے لئے حکمت عملی تیار کر لی ہے۔ اس حوالے سے ایپکا کے مرکزی صدر حاجی محمد ارشاد چودھری نے گزشتہ روز ایپکا کے مرکزی، صوبائی اور ریجنل عہدیداروں لالہ محمد اسلم، ارشد باجوہ، چودھری ابوھریرہ اور یونس بھٹی سمیت دیگر عہدیداروں کے ہمراہ صحافیوں کو بتایا کہ پنجاب حکومت کو 16 دسمبر تک مطالبات کی منظوری کے لئے ڈیڈ لائن دے رکھی ہے۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری شوکت علی سے آج صبح مذاکرات ہوں گے جس میں حکومت نے سرکاری ملازمین کے چارٹر آف ڈیمانڈ کی منظوری دے دی تو وزیراعظم او وزیراعلیٰ پنجاب کے حق میں زندہ باد کی ریلیاں نکالی جائیں گی ورنہ تحریک شروع کریں گے۔دریں اثناء تحریک اساتذہ پنجاب نے اساتذہ کے ٹائم سکیل پروموشن سمیت دیگر مطالبات منظور نہ ہونے پر احتجاجی تحریک چلانے کی دھمکی دیدی ہے۔ اس حوالے سے تحریک اساتذہ راہنماؤں رانا لیاقت علی، وحید مراد یوسفی، چوہدری محمد علی، میاں ارشد،منیر سندھو، افضل بھنڈر، محمد عمران و دیگر نے کہا ہے کہ سی ای اوایجوکیشن لاہور پرویز اختر خاں نے 7دسمبر کو مذاکرات میں جو وعدے کئے تھے ابھی تک پورے نہیں ہو ئے اگر ایسا ہی رہا تو پھر تحریک چلانے پر مجبور ہو جائیں گے۔

  ایس ایس ٹی اساتذہ کے ٹائم سکیل کے آرڈرز 15دسمبر تک جاری کرنے، کنٹریکٹ اساتذہ کی مستقلی کے آرڈرز 20دسمبر تک، ون ونڈو کا فوری قیام اور جی پی فنڈ کی منظوری میں غیر ضروری رکاوٹوں کو دور کرنے کا وعدہ کیا تھا لیکن تاحال ان میں سے کسی بھی وعدے پر عمل درآمد نہیں ہو سکا۔جس کی وجہ سے اساتذہ میں بے چینی و اضطراب کی فضاء پیدا ہو رہی ہے۔ سی ای اوایجوکیشن لاہور وعدوں کی پاسداری کرتے ہوئے اساتذہ کے جائز مسائل کو حل کرنے کے لئے فوری اقدامات اُٹھائیں۔لہذا ایس ایس ٹی اساتذہ کے ٹائم سکیل کی ایڈوائس فی الفور جاری کی جائے وگرنہ تحریک اساتذہ لاہور احتجاج پر مجبور ہوگی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...