صدر ٹرمپ کے مواخذہ میں ساتھ دیں، ڈیمو کریٹس کی ریپلبکن  سے درخواست

صدر ٹرمپ کے مواخذہ میں ساتھ دیں، ڈیمو کریٹس کی ریپلبکن  سے درخواست

  



واشنگٹن(اظہر زمان،بیوروچیف) ڈیموکریٹک پارٹی کے سرکردہ لیڈروں نے ریپبلکن ارکان پر زور دیا ہے وہ پارٹی لائن کو عبور کرتے ہوئے اپنے ریپبلکن صدر ٹرمپ کے مواخذے میں ان کا ساتھ دیں۔ ایوان نمائندگان کی انٹیلی جنس کمیٹی کے چیئرمین ایڈم شیف اور جوڈیشری کمیٹی کے چیئرمین جیری نیڈلر نے اتوار کے روز مشترکہ اپیل جاری کی۔ مسٹر شیف کا کہنا ہے ڈونلڈ ٹرمپ جمہوریت کیلئے ایک واضح خطرہ بن چکے ہیں۔ آئندہ ہفتے میں کسی بھی وقت ایوان نمائندگان کے فل ہاؤس میں مواخذے کا بل منظور ہو جائیگا اور سینیٹ میں باقاعدہ مقدمہ چلے گا چونکہ سینیٹ میں ری پبلکن پارٹی کو اکثریت حاصل ہے اور ویسے بھی مقدمے کی کامیابی کیلئے دو تہائی ووٹ درکار ہیں اس لئے سینیٹ میں مواخذے کا مقدمہ خارج ہونے کا واضح امکان ہے۔ اے بی سی ٹی وی کے پروگرام میں اس پر تبصرہ کرتے ہوئے چیئرمین شیف نے کہا کہ سینیٹ صدر ٹرمپ کو بری بھی کر دے تو پھر بھی مواخذے کو ناکام نہیں کہا جا سکتا۔ مواخذے کا مقدمہ بذات خود ایک سیاہ دھبہ ہے اور صدر ٹرمپ امریکی تاریخ میں مواخذے کا سامنا کرنے والے چوتھے صدر بن جائیں گے۔ اسی پروگرام میں شریک چیئرمین نیڈلر نے ڈیموکریٹک پارٹی کا موقف پیش کرتے ہوئے کہا ٹرمپ امریکہ کی قومی سلامتی اور جمہوریت کیلئے ایک مسلسل خطرہ بن چکے ہیں۔ وہ جوڈیشری کمیٹی کے سربراہ ہیں جس نے جمعہ کے روز صدر ٹرمپ کے مواخذے کیلئے دو دفعات پر مبنی بل تیار کر کے منظور کیا تھا۔ ان دفعات کے تحت صدر ٹرمپ پر طاقت کے ناجائز استعمال اور کانگریس کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے کے الزامات لگائے گئے تھے۔ کانگریس کمیٹیوں نے صدر ٹرمپ کی جولائی میں یوکرائن میں اپنے ہم منصب سے فون کال کے بعد تفتیش شروع کی تھی جس میں انہوں نے مبینہ طور پر اپنے انتخابی حریف اور سابق نائب صدر جوبائیڈن کو بدعنوانی کے معاملات میں پھنسانے کیلئے زور دیا تھا اور اس کے بدلے میں چار سو ملین ڈالر کی فوجی امداد بحال کرنے کا وعدہ کیا تھا۔

ڈیموکریٹس

مزید : صفحہ اول