سرائے نورنگ: عاصمہ رانی قتل کیس، مختلف پارٹیوں کا مشترکہ احتجاجی مظاہرہ 

سرائے نورنگ: عاصمہ رانی قتل کیس، مختلف پارٹیوں کا مشترکہ احتجاجی مظاہرہ 

  



سرائے نورنگ(نمائندہ پاکستان)ایوب میڈیکل کا لج کی طا لبہ ڈاکٹر عاصمہ را نی کے قتل کے خلاف لکی مروت کے مختلف پارٹیو ں کے مقامی قائد ین اور عما ئد ین علا قہ نے مشترکہ طور پر احتجا ج کرتے ہو ئے حکو مت سے ملز م کو سر عام پھا نسی دینے کا مطا لبہ کیا، انصاف نہ ملنے کی صورت میں اُن کا خا ندا ن سپر یم کورٹ کے با ہر خود سوزی کر یگا یہ مطا لبہ گذشتہ روزیہا ں سرائے نورنگ کے قلعہ گروانڈ میں منعقدہ احتجاجی جلسہ میں کیا گیاجس میں مقتولہ عاصمہ را نی کے والد غلا م دستگیر،چچاراجہ زربادشاہ،جماعت اسلامی کے ضلعی امیرحاجی عزیزاللہ،جماعت اسلامی کے مفتی عرفان اللہ، ٹی ایس پی تنظیم کے سربراہ ملک وقاص خان، اے این پی کے ضلعی سینئرنائب صدرممریزخان،ریٹائرڈملازمین کے چیئرمین صفت اللہ،سلیمان خٹک اورسلیم ملتان خان دیگرمشران نے شرکت کی سمیت عام شہر یو ں نے شر کت کی جر گے سے خطا ب کر تے ہو ئے مقر رین کا کہنا تھا ڈاکٹر عاصمہ را نی جو کہ کو ہا ٹ میں میڈ یکل کا لج کی طا لبہ تھی‘ کو گزشتہ برس ملز م مجا ہدآفریدی نے مبینہ طورپر اپنے ہی گھر کے سا منے گو لی ما ری جس سے وہ شدید زخمی ہو گئی عاصمہ را نی کو فوری طور پر طبی امدا د کے لئے ہسپتا ل منتقل کر دی گئی تا ہم وہ زخمو ں کی تا ب نہ لا تے ہو ئے دم توڑ گئی اور مر نے سے قبل انہو ں نے ویڈیو پیغا م میں باقاعدہ ملز م کی نشاندہی کی جس کے بعد قانو ن نا فذ کر نیوالے اداریں فوری حر کت میں آگئے اور ملز م کو انٹر پو ل کے ذریعے بیر ون ملک سے گر فتار کر کے پا کستان لا یا چونکہ ملز م کا تعلق با اثر گھرا نے سے ہے اسلئے اپنے سیا سی اثر رسوخ استعما ل کر تے ہو ئے عد الت میں زیر سما عت مقدمہ پر اثر انداز ہو رہے ہیں اور خدشہ ہے کہ ملز م باعز ت طر یقے سے بر ی ہو گا اور عاصمہ رانی کو انصاف نہیں ملے گا سیا سی و مذ ہبی جما عتو ں کے مقامی قائد ین اور عما ئد ین علا قہ نے جرگے سے خطا ب کر تے ہو ئے اس آمر پر افسوس کا اظہار کیا کہ دو سال قبل قتل ہو نیوالی عاصمہ رانی کے خا ندا ن کو تا حال انصاف نہیں ملا ہے جو کہ لمحہ فکر یہ ہے شرکا ء جر گہ نے عاصمہ رانی کے خا ندا ن کیسا تھ دلی ہمد ردی کا اظہار کر تے ہو ئے اُ نہیں ہر قسم کے تعا ون کی یقین دہا نی کرا ئی اور چیف آف آرمی سٹا ف جنر ل قمر جا وید با جوہ اور چیف جسٹس آف پا کستان سے پر زور مطا لبہ کیا کہ مبینہ طورپرملزم مجا ہد آفریدی کے خلاف در ج ایف آئی آر سے دہشت گر دی کے دفعات ختم نہیں کئے جا ئیں اور ملز م کو سر عام پھا نسی پر لٹکا یا جا ئے احتجاجی جلسہ ختم ہو نے کے بعد شرکا ء نے نورنگ بازارمیں احتجا جی ریلی بھی نکالی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...