ایمل ولی صوبے کے تمام اضلاع کا مرحلہ وار دورہ کریں گے، سردار بابک

ایمل ولی صوبے کے تمام اضلاع کا مرحلہ وار دورہ کریں گے، سردار بابک

  



پشاور(سٹی رپورٹر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و ڈپٹی اپوزیشن لیڈر سردار حسین بابک نے صوبائی صدر ایمل ولی خان کے کامیاب دورہ بنوں پر تمام تنظیموں اور کارکنوں کو شاباش اور مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ کارکنوں اور صاحب الرائے مشران کی انتھک کوششون سے ضلع کے کونے کونے میں تمام پختونوں نے ایمل ولی خان کا پرتپاک استقبال کیا اور ان کے دورے کو کامیاب بنایا۔ ایمل ولی خان نے اس سے پہلے سوات، بونیر، صوابی کا تفصیلی دورہ کیا ہے اور صوبے کے تمام اضلاع کا مرحلہ وار دورہ کریں گے اور پختونوں میں اتفاق اور بیداری پیدا کرنے کیلئے باچا خان اور ولی خان کے پیغام کو عام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایمل ولی خان پارٹی کے تمام ذیلی تنظیموں کو فعال اور متحرک بنانے کی ہدایات جاری کردی ہے اور پارٹی کو ہر سطح پر منظم اور متحرک بنانے کیلئے دن رات کام کریں گے۔ ہر شعبہ زندگی سے تعلق رکھنے والے پختون پختونوں کو متحد اور متحرک رکھنے کیلئے اپنی کوششیں تیز کردیں۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان نسل کو پختونون کی تاریخ سے باخبر رکھنے اور سیاسی، سوجھ بوجھ پیدا کرنے کیلئے پارٹی نے صوبے میں سٹڈی سرکلز کا آغاز کیا ہے اور تمام ضلعی تنظیموں کی مشاورت سے اس اہم پروگرام کو کامیاب بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اے این پی ایک بہت بڑی تاریخ رکھتی ہے جو قربانیوں سے بھری پڑی ہے۔ پارٹی کے بڑھتے ہوئے گراف کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ صوبے کے بہت بڑے بڑے سیاسی اور سماجی شخصیات بہت جلد اے این پی میں شمولیت کا اعلان کریں گے۔ جنوبی اضلاع کے تمام علاقے خدائی خدمتگاروں کا تاریخی قلعہ ہے اور انشاء اللہ بہت جلد جنوبی اضلاع بھی صوبے کے دوسرے علاقوں کی طرح اے این پی کا مضبوط گڑھ بن جائیگا۔ اے این پی پختونوں کی حقوق اور بقا کی جنگ لڑنے والی واحد پارٹی ہے اور یہی وجہ ہے کہ باشعور اور تعلیم یافتہ طبقہ بھی قوم پرستی کیطرف لوٹ آئے ہیں۔ پختونوں کیساتھ ہونیوالے ناروا سلوک اور ناانصافیوں نے پختونوں میں احساس پیدا کردیا ہے کیونکہ کوئی بھی پختون ان ناروا سلوک اور ناانصافیوں پر خاموش نہیں رہ سکتا۔ انہوں نے کہا کہ پختون باشعور ہیں اور انہیں مزید دھوکے میں نہیں رکھا جاسکتا، پختونون کے وسائل اور ذرئع آمدن کو پختونوں کی ترقی کی بجائے ملک کے دوسرے حصوں کی ترقی کیلئے استعمال میں لانا کونسا انصاف ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...