ہندوستان میں مسلمانوں پر ظلم بند کیاجائے ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

ہندوستان میں مسلمانوں پر ظلم بند کیاجائے ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی
ہندوستان میں مسلمانوں پر ظلم بند کیاجائے ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت میں گائے کاگوشت کھانے پر مسلمانوں کو قتل کیاجاتاہے ، آسام میں 20لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کی گئی ہے ، ہندوستان میں مسلمانوں پر ظلم بند کیاجائے اورمقبوضہ کشمیر میں قید افراد کو رہاکیاجائے ۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت میں پرامن مظاہر ین پر تشدد کیاجارہاہے ، بھارت میں آر ایس ایس کی سوچ غالب آگئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ بھارت میں احتجاج مودی کی سوچ کا عکاس ہے ، پاکستان نے بھارتی شہریت کا متنازعہ بل مسترد کردیا ہے ، دنیا بھر میں بھارتی شہریت بل کی مذمت کی جارہی ہے ۔متعدد ممالک نے اپنے شہریوں کوبھارت نہ جانے کی ایڈوائزری جاری کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت میں متنازعہ قانون کیخلاف شدید احتجاج جاری ہے ، بھارت کی پانچ ریاستوں نے متنازعہ قانون کومسترد کردیا ہے ، مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ عوام کوقانون کے خلاف سڑکوں پر احتجاج کیلئے نکلنے کا کہہ رہی ہیں۔

وزیر خارجہ کاکہنا تھا کہ بھارت میں مظاہروں کے دوران متعدد لوگ جاں بحق ہوچکے ہیں،بھارت میں شہری سراپااحتجاج ہیں۔ بھارت میں جس طرح پر امن مظاہرین پر تشدد ہورہاہے سب کچھ دیکھ رہے ہیں۔ بھارت میں مظاہروں نے ہنگاموں کی شکل اختیار کرلی ہے، پرامن طلبہ پر ظلم وستم کا سلسلہ جاری ہے ۔جامعہ ملیہ دہلی پر پولیس نے نہتے بچوں پرحملہ کیا اور بچیوں کی ٹانگیں توڑ دی گئیں ، علی گڑھ یونیورسٹی میں جو بربریت کی گئی وہ بھی آپ کے سامنے ہے ۔ انہوں نے کہاکہ آج پاکستان اور پوری مسلم امہ کودیکھنا چاہئے کہ آج سانحہ گجرات کوتازہ کیاجارہاہے ، 2002میں مودی گجرات کاوزیر اعلیٰ تھااور اس نے ہزاروں مسلمانوں کو شہید کروادیااوراملاک کو تباہ کروایا ۔آج مود ی ہندوستان کا وزیراعظم ہے اورپورے ہندوستان کے مسلمانوں کے ساتھ ظلم کیاجارہاہے ۔انہوں نے کہاکہ بھارت میں سکھ ، ہندو ، پارسی ، بدھ اورجین مت قبول ہیں لیکن مسلمان قبول نہیں ہیں۔ بھارت میں گائے کاگوشت کھانے پر مسلمانوں کو قتل کیاجاتاہے ، آسام میں 20لاکھ مسلمانوں کی شہریت ختم کی گئی ہے ۔

انہوں نے کہاکہ ہندوستان میں مسلمانوں پر ظلم بند کیاجائے اورمقبوضہ کشمیر میں قید افراد کو رہاکیاجائے ۔ شہریت کا بل صر ف مسلمانوں کیخلاف پاس کیاگیاہے ۔ اس ایوان کو پیغام دیناہوگا کہ پور ی قوم مود ی کے عزائم کیخلاف متحدہے ۔عالمی برداری کوجس طرح کردار ادا کرنا چاہئے تھانہیں کرسکی ، مقبوضہ کشمیر میں آج بھی انٹرنیٹ سروس بند ہے اورانسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ہورہی ہیں۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...