عمران خان سعودی دباﺅ کے سامنے جھک گئے ! ملائیشیا کادورہ منسوخ کردیا

عمران خان سعودی دباﺅ کے سامنے جھک گئے ! ملائیشیا کادورہ منسوخ کردیا
عمران خان سعودی دباﺅ کے سامنے جھک گئے ! ملائیشیا کادورہ منسوخ کردیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان نے دورہ ملائیشیا منسوخ کردیا ، جنیوا میں ہونیوالی عالمی پناہ گزین کانفرنس میں شرکت کریں گے ۔

نجی نیوز چینل کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کا دورہ ملائیشیا منسوخ کردیا گیاہے ، اب وزیر اعظم عمران خان کی جگہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی ملائیشیا سمٹ میں شرکت کیلئے کوالالمپورجائیں گے ۔ وزیر اعظم جنیوا میں عالمی پناہ گزین کانفرنس میں شرکت کریں گے ۔

اس سے قبل وزیر اعظم بحرین کادورہ کرکےمکملجینوا روانہ ہوگئے،وزیراعظم عمران خان کو بحرین کا اعلیٰ ترین سول ایوارڈ دیا گیا ۔ وزیر اعظم عمران خان بحرین کے محل رسخیر پہنچے جہاں بحرین کے بادشاہ حمد بن عیسیٰ الخلیفہ نے ان کا استقبال کیا ۔ اس موقع پر شاہ حمد بن عیسیٰ الخلیفہ نے وزیر اعظم عمران کو بحرین کا اعلیٰ ترین سول اعزاز دیا ۔ وزیر اعظم عمران خان نے بحرین کے قومی دن کی تقریبات میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی ۔ایک روز قبل وزیر اعظم نے سعودی عرب کادورہ بھی کیاتھا جہاں انہوں نے شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے ملاقاتیں کی تھیں ۔

ایک نجی نیوز چینل کے مطابق دفتر خارجہ کے ایک سینئر افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پربتایا تھاکہ وزیر اعظم عمران خان نے سعودی قیادت کو یقین دلایا ہے کہ پاکستان ایسے کسی نئے اسلامی بلاک کا حصہ نہیں بنے گا جو سعودی مفادات کے خلاف کام کرے گا، اس کے برعکس ہماری کوشش تمام مسلم ممالک کے مابین اتحاد کے لیے کام کرنا ہے، سعودی عرب اور ترکی کے درمیان سعودی صحافی خاشقجی کی ہلاکت کے بعد سے کشیدگی چلی آرہی ہے پاکستان اسے کم کرنے کی بھی کوشش کر رہا ہے۔ذرائع کے مطابق کوالالمپور میں پاکستان، ترکی، ایران، قطر اور انڈونیشیا کے لیڈروں کی کانفرنس کو سعودی عرب او آئی سی کے متبادل اسلامی بلاک کے طور پر دیکھتا ہے اور اس کانفرنس میں اپنی اور اپنے عرب اتحادیوں کی غیر موجودگی سے پریشان ہے۔یہ کانفرنس ملائشین وزیر اعظم مہاتیر محمد کی میزبانی میں منعقد ہورہی ہے اور وہ اس بات کا کھلے عام اظہار کرچکے ہیں کہ او آئی سی مسلم امہ کے مفادات کے تحفظ میں ناکام ہوچکی ہے اس لیے یہ اتحاد او آئی سی کا متبادل ثابت ہوسکتا ہے جب کہ سعودی عرب سمجھتا ہے کہ اس طرح کا نیا اسلامی بلاک مسلم دنیا میں سعودی عرب کے کردار کو کم کرسکتا ہے، اسی تناظر میں پاکستان کی سول اور فوجی قیادت نے سعودی عرب کے متعدد دورے کئے ہیں۔

مزید : اہم خبریں /قومی