وہ آدمی جس کی موت کی وجہ سے لوگوں کے 20ارب روپے ڈوب گئے

وہ آدمی جس کی موت کی وجہ سے لوگوں کے 20ارب روپے ڈوب گئے
وہ آدمی جس کی موت کی وجہ سے لوگوں کے 20ارب روپے ڈوب گئے

  



اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) کینیڈا کی سب سے بڑی ڈیجیٹل کرنسی ’بٹ کوائن‘ کی ٹریڈنگ کمپنی کے مالک کی مبینہ طور پر بھارت میں موت واقع ہو گئی اور جاتے جاتے وہ سرمایہ کاروں کے 13کروڑ 70لاکھ ڈالر (تقریباً21ارب 34کروڑ روپے) بھی ساتھ لے گیا۔ میل آن لائن کے مطابق 30سالہ جیرالڈ کاٹن نامی یہ شخص ’کواڈریگا سی ایک‘ نامی کمپنی کا بانی تھا جو اب دیوالیہ ہو چکی ہے۔ گزشتہ سال دسمبر میں جیرالڈ نے جینیفر رابرٹسن نامی لڑکی کے ساتھ شادی کی تھی جس کے بعد دونوں ہنی مون پر بھارت چلے گئے اور چند روز بعد وہاں سے جیرالڈ کی موت کی خبر آ گئی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق جیرالڈ کو کرہنز سنڈروم نامی عارضہ لاحق ہوا جس کی وجہ سے اس کی 9دسمبر 2018ءکو بھارت میں موت واقع ہو گئی۔

بتایا گیا ہے کہ جیرالڈ کو بھارت میں ہی دفن کر دیا گیا لیکن اس کی کمپنی میں سرمایہ لگانے والے سرمایہ کاروں کو شک ہے کہ جیرالڈ کی موت نہیں ہوئی بلکہ وہ زندہ ہے۔ ان سرمایہ کاروں نے کینیڈین پولیس کو ایک درخواست دی ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ جیرالڈ کی قبرکشائی کی جائے تاکہ اس کی شناخت ہو سکے اور اس کی موت کی وجہ معلوم کی جا سکے۔ رپورٹ کے مطابق رپورٹ کے مطابق جیرالڈ کی موت کے بعد اس کی کمپنی دیوالیہ ہوئی جس کے کسٹمرز کی تعداد 115تھی۔ایک آڈیٹر اب تک صرف اڑھائی کروڑ ڈالر کی ہی ریکوری کر سکا ہے۔ انٹرنیٹ پر بھی افواہیں گردش میں ہیںکہ جیرالڈ زندہ ہے اور فراڈ کرکے فرار ہو گیا ہے اور اب سرمایہ کاروں کی اس رقم پر عیش کی زندگی گزار رہا ہے۔جیرالڈ کے متعلق معلوم ہوا ہے کہ وہ کئی فرضی ناموں کے ساتھ ڈیجیٹل کرنسی کی ٹریڈنگ کرتا رہا اور اپنی موت سے قبل اسے کافی رقم کمپنی کے اکاﺅنٹ سے اپنے ذاتی اکاﺅنٹس میں ٹرانسفر کرلی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس