سانحہ اے پی ایس درد وغم کی داستان سابق رکن قومی اسمبلی اورنگزیب خان

  سانحہ اے پی ایس درد وغم کی داستان سابق رکن قومی اسمبلی اورنگزیب خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

میلسی (نامہ نگار)سابق رکن قومی اسمبلی محمد اور نگ زیب خان کھچی نے کہا ہے کہ سانحہ 16 دسمبراے پی ایس کالج ایک دردو غم کی داستان ہے جس نے پاکستان کے ہر شخص پر دکھ کی برسات کر دی۔ہر پاکستانی کے دل پر داغ کی مانند ہے اس کے دکھ کی چبھن اور غم کی رقت(بقیہ نمبر16صفحہ7پر)

 میں لپٹی مائیں انصاف طلب ہیں کہ ان کے تمام ظالموں کو کیفرکردار  تک پہنچا یا جائے 13 سال سے ان کا خون رونا بند نہیں ہوا ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں میڈیا سے کیا ا نہوں نے کہا کہ قوم کی خواتین بچے اور بھائی اس دکھ کو آج بھی روح ودل پر محسوس کرتے ہیں۔کہ کیسے 2010کی 16 دسمبر کو دکھ کے یہ بادل دہشت گردوں کے بارود اور گولیوں کی صورت میں آئے اور ان کی جھولیاں ویران کر گئے۔ محمد اور نگ زیب خان کھچی نے کہا کہ یہ سانحہ صحیفہ  غم ہے کہ اس میں معصوم بچوں کو شہید کیا گیا جن کی مائیں ا ن کی سکول سے آمد کو تکتی رہ گئیں جو انہیں ڈاکٹر اور انجینیر بنتے دیکھنا چاہتی تھیں مگر اے پی ایس کے عسکری تعلق کی بنا پر ان کے بچے اور معلمات قربان ہوئیں بزدل دشمن نے آرمی کے جوانوں کا بدلہ بچوں سے لے کر اپنی کمزوری اور گھنانا پن ظاہر کیا پوری قوم ان کے لیے آج شمعیں جلائے گی۔