خزاں رسیدہ  چمن پرنکھار کا  موسم۔۔۔

خزاں رسیدہ  چمن پرنکھار کا  موسم۔۔۔
خزاں رسیدہ  چمن پرنکھار کا  موسم۔۔۔

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

خزاں  رسیدہ  چمن پر نکھار   کا موسم
کھلے  گا میرے  خدا  کب   بہار  کا موسم 

سبب نہیں ہے  مرے  آشیاں نشینوں  کا
سنوار   دیں  کبھو   اجڑے   دیار   کا  موسم

بیان حسن صنم جب غزل میں نکھرے گا
زمین   پر  ملے  گا روز   پیار   کا  موسم 

شراب سے  نہ ہو گا  اب علاج غم ساقی
کہیں سے  کھینچ  کے لاؤ   خمار  کا  موسم

ہنوز ان کے خیالوں  میں جی  رہا ہوں میں
بھلے  نہیں ہے  وہ   میٹھی  جوار   کا   موسم

مرے  وجود   کی خوشبو  ملے  گی اے یارو
ذرا  جو  اترے  کہیں  اشک بار   کا  موسم 

لہو ہے آنکھ میں تو دل ہے خون و خوں میرا
جلا  نہ  دوں  کٹے  ہاتھوں سے خار کا موسم 

نہ شعلے میں ہے حرارت نہ راکھ میں حدت
وگرنہ  تو  میں  بدل  دوں  یہ  ہار  کا موسم

کبھی تو  بدلیں گے میرے نصیب امبر جی
چھٹے   گا   روز   قیامت  غبار   کا   موسم

کلام :  ڈاکٹر شہباز امبر رانجھا

مزید :

شاعری -