شعبہ امراضِ قلب میں افواج کے ادارے کلیدی کردار ادا کر رہے ہیں‘پروفیسر ظفر اللہ

شعبہ امراضِ قلب میں افواج کے ادارے کلیدی کردار ادا کر رہے ہیں‘پروفیسر ظفر ...

لاہور(پ ر)آرمڈ فورس انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے زیر اہتمام امراض قلب پر گیارھویں بین الاقوامی کانفرنس کااہتمام کیا گیا جس میں ملک بھر سے ماہرین قلب کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔تقریب کے مہمانِ خصوصی صدر کالج آف فزیشنز اینڈ سرجنز پاکستان پروفیسر ظفر اللہ چوہدری نے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے افواجِ پاکستان کے امراض قلب کے طبی اداروں کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ اے، ایف، آئی، سی ملک کا پہلا ادارہ ہے جہاں شعبہ امراض قلب میں جدید تربیتی نظام کو اپنایا گیا اور الیکٹروفزیالوجی کا فیلو شپ پروگرام شروع کروانے والے دنیا بھر کے چند ایک اداروں میں اس کا شمار ہوتا ہے اورآئندہ سال تک ملک کو اس جدید شعبہ میں اس ادارے کی وجہ سے ماہرین مل سکیں گے۔سی پی ایس پی کے نئے فیلو شپ پروگرام کی بدولت پاکستانی عوام کو ہر شعبہ جات میں ماہرین میسرہو رہے ہیں۔ ادارے کے کمانڈنٹ میجر جنرل عمران مجید نے خطبہ استقبالیہ میں بین الاقوامی کانفرنس کی غرض و غایت پر روشنی ڈالی ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پاکستان ہارٹ ردھم سوسائٹی کے صدر پروفیسر زاہد اسلم نے اعلیٰ طبی تعلیم میںسی پی ایس پی کے مسلمہ کردار کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ ملکی حالات میںکالج کی مثالی کارکردگی باعث فخر ہے اور بین الاقوامی سطح پر کالج وطن عزیز کی پہچان بن چکا ہے۔ سرجن جنرل پاکستان آرمی لیفٹیننٹ جنرل اظہر رشید نے شعبہ امراض قلب میں انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے کردار اور ادارے کی ترقی میں افواجِ پاکستان کے ماہرین کی خدمات پر بریفینگ دی ۔ پروفیسر جے سنگھ نے الیکٹروفزیالوجی فیلوشپ پروگرام کی اہمیت سے شرکاءکو آگاہ کیا۔اس موقع پر نائب صدر سی پی ایس پی پروفیسر اصغر بٹ ، کونسلرز ، پرنسپل آرمی میڈیکل کالج میجر جنرل سلمان علی ، میجر جنرل عبدالخالق نوید سمیت افواج پاکستان کے اعلیٰ افسران اور طبی ماہرین موجود تھے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4