بچوں کا مستقبل کی خاطر دہشتگردوں کا صفایا ضروری ہے :چیف جسٹس ثاقب نثار

بچوں کا مستقبل کی خاطر دہشتگردوں کا صفایا ضروری ہے :چیف جسٹس ثاقب نثار

  

اسلام آباد ( خصوصی رپورٹ) چیف جسٹس آف پاکستا ن جسٹس ثاقب نثار نے لاہور اور پشاور میں ہونے والے دہشتگردی کے واقعات کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشتگردوں کا صفایا کریں گے کیونکہ یہ ہمارے بچوں کے مستقبل کا سوال ہے۔ وکلا کو ریلیف نہ ملنے پر جج صاحبان سے زیادتی کرنے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے ،ہمیں مل کر رہنا چاہئے ہم ایک ہی جسم کے دو حصے ہیں۔ چیف جسٹس آف پاکستان کا پاکستان بارکونسل کے عشائیہ سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سانحہ لاہوراورپشاورکی بھرپورمذمت کرتے ہیں،ہم دہشتگردی کیخلاف جاری جنگ میں کامیاب ہوں گے اور دہشتگردوں کا صفایا ہوگاکیونکہ یہ ہمارے بچوں کے مستقبل کاسوال ہے۔انہوں نے کہا کہ عدلیہ کے پاس اختیارات ہیں اور عوام کو انصاف ہوتا ہوا نظر آئے گا۔ پاکستان کو اپنے کردار اور کاوشوں سے بہترین ملک بناناہے۔سپریم کورٹ کاہر جج ایک قلعہ ہے اسے کسی صورت تسخیر نہیں کیا جاسکتا اورنہ کوئی ملکی خدمت میں ہمارے جذبے کومتزلزل کرسکتا ہے۔کسی بھی ملک کی آزاد عدلیہ ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ جج قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کا پابندہوتا ہے وہ قانون کی خلاف ورزی کر کے فیصلہ کرنے کا اختیار نہیں رکھتاکیونکہ قانون کے مطابق فیصلہ کرنا ججوں کی آئینی ذمہ داری ہے او رقانون کی حکمرانی ملکی ترقی کے لئے ناگزیر ہے۔ انصاف کی فراہمی ہماری ذمہ داری و مقصد ہے اورآنے والے وقت میں بھی عدلیہ اداروں کی اصلاح میں کرداراداکریگی۔میں یقین دلاتا ہوں کہ ججزتقرریاں میرٹ پرہوں گی کیونکہ ججوں کی عزت آزادعدلیہ کیساتھ ہے۔

چیف جسٹس

مزید :

علاقائی -