پولیس کو تین ماہ سے غائب گھریلو ملازمہ بازیاب کرنے کا حکم

پولیس کو تین ماہ سے غائب گھریلو ملازمہ بازیاب کرنے کا حکم

  

لاہور(نامہ نگار)غربت کے باعث گھر کا خرچہ چلانے کی خاطرماں نے بیٹی کو ماجد نامی شخص کے ذریعے کوٹھی میں ملازم رکھوایا،3ماہ ہوگئے بیٹی کا چہرہ تک نہیں دیکھا،مذکورہ شخص نے اس کی بیٹی کوغائب کر دیا ہے، متاثرہ بیوہ ماں پولیس کے پاس دھکے کھانے کے بعد بیٹی کی بازیابی کے لئے سیشن عدالت پہنچ گئی ۔ایڈیشنل سیشن جج غلام مرتضی چودھری کی عدالت میں فیکٹری ایریا کی شبانہ نامی خاتون نے اپنے وکیل کی وساطت سے عدالت میں دائر درخواست میں موقف اختیار کیا کہ اس کا خاوند فوت ہوگیا ، اس نے اپنی 17سالہ بیٹی نورفاطمہ کو ماجد نامی شخص کے حوالے کیا تاکہ اسے کسی کوٹھی میں ملازم رکھوا دے کیوں کہ اس کے گھر کے مالی حالات خراب ہیں ،مذکورہ شخص اس کی بیٹی کو لے گیا اور شہزاد نامی شخص کے حوالے کردیا اور بتایا کہ اس نے کوٹھی میں ملازم کرادیا ہے ،3 ماہ ہوگئے ہیں اس کی لڑکی کا کچھ پتہ نہیں،ماجد سے پوچھا تو وہ ٹال مٹول شروع کردیتا ہے ،پولیس بھی بات نہیں سن رہی ہے ،عدالت سے استدعا ہے کہ اس کی بیٹی کو بازیاب کرایا جائے۔ عدالت نے فیکٹری ایریا پولیس کو حکم دیا ہے کہ درخواست گزار کی بیٹی کو آئندہ سماعت پر عدالت میں پیش کیا جائے،عدالت میں سماعت کے موقع پر ماں اپنی بیٹی کو یاد کرکے زاروقطار روتی رہی۔

مزید :

صفحہ آخر -