سانحہ لاہور سے قومی معیشت کو جھٹکا ،سٹاک مارکیٹ مندی کا شکار ،ڈالر کے مقابلے میں روپے کو زوال

سانحہ لاہور سے قومی معیشت کو جھٹکا ،سٹاک مارکیٹ مندی کا شکار ،ڈالر کے مقابلے ...

لاہور ( اسد اقبال )سانحہ لاہور نے قومی معیشت پر گہرے منفی اثرات چھوڑے ہیں اور امن و امان کی غیر یقینی صو رتحال کے پیش نظر مارکیٹوں ، بازاروں اور بنکوں میں رقوم کا لین دین سخت مندی کا شکار ہے ۔ڈالر کے مقابلہ میں پاکستانی روپے کی قدر میں بھی کمی واقع ہوئی ہے جبکہ پاکستان سٹا ک مارکیٹ کے پوائنٹس میں بھی تیزی سے نیچے گرے ہیں ۔ماہرین معیشت کے مطابق دہشت گردی سے جہاں قوم کو جانی و مالی نقصان اٹھانا پڑتا ہے دوسری جانب ملکی معیشت بھی زبوں حالی سے دوچار ہوتی ہے ۔ضرورت اس امر کی ہے کہ پاک فو ج اورحکومت وقت دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے کے لیے آپریشن ضرب عضب کو پایہ تکمیل تک پہنچائے ۔تفصیلات کے مطابق تین روز قبل پاکستان کے دل لاہو شہر کی معروف شاہراہ مال روڈ پر ہونے والے خو د کش بم دھماکے کے بعد ملکی معیشت کو جھٹکا لگا ہے لاہو ر کی تھو ک منڈیوں سے لے کر پر چون مارکیٹوں میں کاروبار ی سر گر میاں تاحال معمول پر نہ آ سکی ہیں ۔مارکیٹ ذرائع کے مطابق مال روڈ بم دھماکے کے بعد لاہو ر کی مارکیٹوں میں 10ارب روپے سے زائد کا کاروبارنہیں ہوا ہے اور پاکستانی روپیہ گردش میں نہ آنے سے ملکی معیشت کو جھٹکا لگا ہے جبکہ سٹاک مارکیٹ میں 553پوائنٹس سے زیادہ کی کمی کے علاوہ ،پاکستانی روپے کی قدر میں ڈالر کے مقابلہ میں کمی اور ڈالر کی قیمت میں 24پیسے کا اضافہ ہوا ہے ۔ماہر معیشت اور سابق وفاقی وزیر خزانہ ڈاکٹر سلمان شاہ نے "پاکستان "سے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ کسی بھی ملک کی معاشی تر قی و خوشحالی کا انحصار امن و امان سے ہوتا ہے اگر ملک میں امن ہے تو نہ صر ف کاروباری سر گر میاں تیز رہتی ہیں بلکہ غیر ملکی سر مایہ کاری کو بھی فروغ ملتا ہے انہوں نے کہا کہ لاہور میں ہونے والے خو دکش بم دھماکے سے ملکی معیشت اور بین الاقوامی سطح پرپاکستانی ساکھ پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں کیو نکہ انٹر نیشنل کر کٹ کے فروغ کے لیے لاہور میں پی ایس ایل کا فائنل اب مشکل جبکہ چینی سر مایہ کار پنجاب میں سر مایہ کاری کرنے پر سو چیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم کو امید تھی کہ ملک میں امن و امان قائم ہو چکا ہے اور دہشت گر دوں کے نوے فیصد سے زائد ٹھکانے تباہ کر دیے ہیں تاہم دہشت گر د آج بھی ہمارے ارد گر د ہیں جن کو جڑ سے اکھاڑنے کے لیے تھنک ٹینک منصو بہ بندی ضروری ہے ۔انہوں نے کہا کہ لاہو ر میں ہونے والا خود کش دھما کا حکمرانوں کے لیے وارننگ ہے جس پر سنجیدگی سے غور کر نا چائیے اور اگر دہشت گر دوں نے مزید دھماکے کر کے پاکستان کے امن کو تباہ کیا تو سی پیک منصو بہ پر گہرے منفی اثرات مرتب ہو نگے ۔

مزید : علاقائی