محکمہ ایسائز اینڈ ٹیکسیشن، موٹر رجسٹریشن اتھارٹی پنجاب میں کروڑوں کی کرپشن کا انکشاف

محکمہ ایسائز اینڈ ٹیکسیشن، موٹر رجسٹریشن اتھارٹی پنجاب میں کروڑوں کی کرپشن ...

  

لاہور(ارشد محمود گھمن//سپیشل رپورٹر) ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن اتھارٹی پنجاب 2008 تا 2015 ٹوکن ٹیکس اور پراپرٹی ٹیکس کے ریکارڈ میں ردوبدل کر کے کروڑوں روپے خوردبرد کرنے کے انکشاف پر اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ لاہور ریجن حرکت میں آگیا۔ریکارڈ کی جانچ پڑتال کیلئے تفتیش کا دائرہ کار وسیع کر لیا گیا۔کرپشن میں ملوث کئی اعلیٰ افسران کے خلاف سخت ایکشن لینے کیلئے غور۔ باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ڈا ئر یکٹر جنرل بریگیڈ یر(ر) مظفر حسین رانجھا اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ پنجاب نے محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن اور موٹر رجسٹریشن اتھارٹی کے ریکارڈ میں ردوبدل کرکے قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے کے خلاف کاروائی کرنے کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب بھرکے تمام اضلاع میں ضلعی افسران نے اپنے مفاد کی خاطر عملہ کے ساتھ ملی بھگت سے 2008سے 2015تک گاڑ یوں کے ٹوکن ٹیکس میں جعلی رسید یں بنا کر موٹر و ہیکل ٹیکس کے کروڑوں روپے خرد برد کر لئے جس کا انکشاف گا ڑیوں کی ڈو پلیکیٹ کا پی اور ملکیت ٹرانسفر کروانے والے مالکان نے ان کے دفاتر کا رخ کیا تو جاری کی گئی رسیدیں جعلی نکلنے لگی اور مزکو رہ مالکان کو دو بارہ لاکھوں روپے مو ٹر وہیکل ٹیکس ادا کر کے ڈوپلیکٹ ر جسٹر یشن،اور ملکیت ٹرانسفر کروانا پڑی اور پراپرٹی ٹیکس میں بھی کرایہ پر دی جانے والی بلڈنگز، کمر شل بلڈ نگز کے ریکارڈ میں ردو بدل کر کے مبینہ طور پر کروڑوں روپے خوردبرد کر کے ہڑپ کر لئے ہیں جس کی وجہ سے قو می خزانہ کو نقصان اٹھانا پڑا ہے۔جب اس بابت موقف دریافت کرنے کیلئے ترجمان اینٹی کرپشن لاہور سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا ہے کہ ڈی جی مظفر حسین رانجھا کے احکامات کی روشنی میں کرپٹ مافیا کا گھیرا تنگ کردیا گیا ہے۔اور حکومتی خزانے کو نقصان پہنچانے والے افسران کے خلاف بھر پور قانونی کاروائی کی جارہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ کرپشن میں ملوث افراد کیلئے معافی کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -