گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کو 48گھنٹے میں تنخواہوں کی ادائیگی کا حکم

گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کو 48گھنٹے میں تنخواہوں کی ادائیگی کا حکم

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہورہائیکورٹ نے گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کو 48گھنٹے میں تنخواہوں کی ادائیگی کا حکم دے دیا۔ دوران سماعت جسٹس شجاعت علی خان نے ریمارکس دیئے کہ کیا گورنر ہاؤس کی دیواریں اتنی اونچی ہو گئی ہیں کہ اندر بیٹھنے والوں کو پتہ نہیں چلتا کہ گوروں کو گئے 70 برس بیت گئے ہیں۔گورنر ہاؤس کے دو ملازموں کی طرف سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھاکہ عدالت عالیہ نے گورنر ہاؤس کے کنٹریکٹ ملازمین کو نوکریوں سے برطرف کرنے کے معاملہ پر حکم امتناعی جاری کر رکھا ہے۔ عدالت نے کنٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے سے متعلق جائزہ لینے کی بھی ہدایت کی ۔ انہوں نے بتایا کہ عدالتی حکم نظرانداز کرتے ہوئے کنٹریکٹ ملازمین کو جولائی 2016ء سے آج تک تنخواہیں ادا نہیں کی گئیں۔ عدالت نے کنٹریکٹ ملازمین کو اڑتالیس گھنٹے میں تنخواہوں کی ادائیگی کا حکم دیتے ہوئے خبردار کیا کہ اگر عدالتی حکم پر عمل نہ ہوا تو گورنر کے پرنسپل سیکرٹری سمیت تمام ملازمین کی تنخواہیں منجمد کر دی جائیں گی۔ عدالت نے کیس کی مزید سماعت27فروری تک ملتوی کر دی ہے۔

مزید :

علاقائی -