سانحہ مال روڈ کے بعد ہسپتالوں میں ہنگامی حالت 48گھنٹے بعد ہی ختم کردی گئی

سانحہ مال روڈ کے بعد ہسپتالوں میں ہنگامی حالت 48گھنٹے بعد ہی ختم کردی گئی

لاہور(جاوید اقبال)سانحہ مال روڈ کے بعد ہسپتالوں میں اعلان کردہ ہنگامی حالت 48گھنٹے بعد ختم کر دی گئی ہے۔اور سرکاری ہسپتال اپنی اصل حالت میں آگئے ہیں۔اہم شخصیات کے زیر علاج زخمیوں کی عیادت کے لئے دورے ختم ہونے کے بعد ہسپتال انتظامیہ اور ڈاکٹروں نے سکھ کا سانس لیا ہے اور روایتی برتاؤ کا سہارا لیتے ہوئے سانحہ کے 90فیصد سے زائد زخمیوں کوخلاف حقیقت صحت مند قرار دیتے ہوئے ہسپتالوں سے فارغ کر کے ان کے گھروں کو بھجوا دیا ہے ۔اس ظالمانہ فعل کا سفاکانہ پہلو یہ ہے کہ زخمیوں کے نیچے بچھائی گئی صاف چادریں اتار کر حسب سابق گندی بد بو داراور خون آلود چادریں بیڈز پرڈال دی گئیں اور نئے بیڈز ہٹا کر پرانے بیڈز وارڈوں میں لگا دئیے گئے ۔گزشتہ روز جب ہسپتال انتطامیہ کو یہ یقین ہو گیا کہ اب کسی وی آئی پی شخصیت نے دھماکہ کے زخمیوں کی عیادت کے لئے نہیں آنا تو انہوں نے صبح سویرے ہی یکے بعد دیگرے مریضوں کو ان کے ہاتھوں میں ڈسچارج سلپیں تھمائیں اور ان کو بے سرو سامانی میں گھروں کو رخصت کر دیا ۔افسوس ناک پہلو یہ ہے کہ بعض ایسے مریض جن کی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی تھیں ان کو بھی ایک ایک ہفتے کا ٹائم دے کر گھروں کو بھیج دیا گیا ۔ اور گھروں میں بھیجنے کے لئے انہیں ایمبولینس تک فراہم نہین کی گئی اور نہ ہی کوئی اضافی بندوبست کیا گیا ۔سروسز ہسپتال میں 14زخمی زیر علاج تھے ان تمام زخمیوں کو صبح سویرے ہی ہسپتال سے ڈسچارج کر کے گھروں کو بھیج دیا گیا ۔اس طرح میو ہسپتال سے بھی 90فیصد زخمیوں کو ڈسچارج کر کے ان کے گھروں کو روانہ کر دیا گیا ۔گنگا رام ہسپتال سے بھی زخمیون کی اکثریت کو گھروں کو بھیج دیا گیا ان میں بعض زخمی ایسے تھے جن کو آپریشن کی ضرورت تھی ان کو ایک سے دو ہفتے کا ٹائم دے کر جان چھڑا لی گئی۔

مزید : صفحہ اول