لُڈن سے ملنے والی نعش کے قتل کیس میں کوئی پیشرفت نہ ہوسکی ورثا کا وزیر اعلیٰ سے نوٹس لینے کا فیصلہ

لُڈن سے ملنے والی نعش کے قتل کیس میں کوئی پیشرفت نہ ہوسکی ورثا کا وزیر اعلیٰ ...

  

لڈن(نامہ نگار) چند روز قبل لڈن کے نواحی علاقہ میں نامعلوم شخص کی نعش ملی جسکو فائرنگ کرکے قتل کردیا گیا تھا ،پولیس کو نہ ملزمان کا پتہ چلا نہ ہی مقتول کے ورثاء کا پولیس نے مقتول کو (بقیہ نمبر54صفحہ12پر )

وہاڑی میں ہی دفن کردیا اور سرکاری کی مدعیت میں ایف آئی آر درج کرلی جبکہ واقعہ کے تین روز بعد ایک دینا ناتھ نزد چونگ لاہور کے رہائشی ساجد نامی شخص نے خود آکر گرفتار دے دی اور پولیس کو بتایا کہ اس نے ایک شخص کو فائرنگ کرکے قتل کیا ہے اور وجہ عناد بتائی کہ ملزم کے اسکی بہن کے ساتھ ناجائز تعلقات تھے ورثاء کو ایک ہفتہ بعد اطلاع ملی کہ انکے لڑکے کو قتل کردیا گیا ہے جس پر وہ بھی تھانہ لڈن آگئے ،مقتول کے بھائی محمد عارف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اسکے مقتول بھائی کا نام محمد عابد ہے اور وہ عرصہ 15سال سے ملزمان کے پاس ملازمت کرتا تھا اور اپنی تنخواہ کے پیسے بھی انہی کے پاس اکھٹے کررہا تھا چند روز قبل ملزمان نے انکے گھر آکر کہا کہ مقتول نے انکی لڑکی کو گھر سے بھگا لیا ہے تاہم انکے بیٹے کے بارے میں کچھ نہ بتایا اور مبینہ ملزمان عبدالحق ، پپی ،مالو ،احسان ،ساجد اور جاوید نے اسکے بھائی کو پہلے اغواہ کیا اور پھر لڈن لا کر فائرنگ کرکے قتل کردیا ہے وجہ صرف اتنی ہے کہ وہ تنخواہ کے پیسے دبانا چاہتے تھے جب ملزم سے پوچھا گیا تو اس نے میڈیا کے سامنے قتل کا اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ مقتول نے اسکی بہن کو گھر سے بھگا رکھا تھا جبکہ اتنے دن گزرنے کے باوجو د اس کیس میں ملوث دیگر ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے نہ ہی کوئی حقیقت سامنے لائی گئی ہے۔

قتل کیس پیشرفت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -