خواتین کے قتل میں سزائے موت پانے والے ایک ملزم کی سزا عمر قید میں تبدیل ‘ دوسرے کو بری کرنیکا حکم

خواتین کے قتل میں سزائے موت پانے والے ایک ملزم کی سزا عمر قید میں تبدیل ‘ ...

  

ملتان (خبر نگار خصوصی)ہائیکورٹ ملتان بینچ نے خواتین کے قتل میں (بقیہ نمبر62صفحہ12پر )

سزائے موت پانے والے ایک ملزم کی سزا عمر قید میں تبدیل کرنے اورووسرے کو بری کرنے کا حکم دیاہے۔فاضل عدالت میں ملزم علی اکبر شیخ نے اپیل دائر کی تھی کہ اس کے خلاف تھانہ صدرچیچہ وطنی میں 6 مئی 2009 ء کو مقدمہ درج کرایاگیا کہ اس نے اپنی بیوی شمیم اختر کو گھر سے کاروبارکے لئے رقم نہ لانے پر چھریوں کے وار کرکے قتل کردیاہے جس پر سیشن کورٹ نے 31 اکتوبر2011 ء کو اس کو سزائے موت کا حکم دیاہے جبکہ وہ بالکل بے گناہ ہے اوراس کی بیوی سے 10 سال قبل شادی ہوئی تھی جس سے اس کے 3 بیٹے اور2 بیٹیاں بھی ہیں اورالزامات درست نہ ہونے کیساتھ کوئی گواہ بھی موجود نہیں ہے جس پر عدالت نے ملزم کی سزاعمرقید میں تبدیل کرنے کا حکم دیا ہے۔ اس طرح محمدیارموچی نے اپیل دائرکی تھی کہ اس کے خلاف 22 اگست 2010 ء کو تھانہ مظفرآبادملتان میں مقدمہ درج کرایاگیا کہ ہمسائے نذرحسین بلوچ کی جانب سے بلااجازت گھر آنے سے منع کرنے پر اس پر سوئے سے حملہ کردیا جبکہ بچانے کے لئے آنے والے نذرحسین کی بیوی کلثوم بی بی کی گردن میں سواآرپارہونے سے جاں بحق ہوگئی ہے جس پر سیشن کورٹ ملتان نے اس کو سزائے موت کا حکم دیاہے۔ملزم کے مطابق وہ بے گناہ ہے اورمقدمہ کاکوئی عینی شاہد نہیں ہے اورنہ ہی اس کے خلاف کوئی ثبوت موجودہے اس لئے بری کرنے کا حکم دیاجائے جس پر عدالت نے ملزم کو شک کافائدہ دیتے ہوئے بری کرنے کا حکم دیاہے۔

عمر قید

مزید :

ملتان صفحہ آخر -