محکمہ بلدیات و دیہی ترقی خیبر پختونخوا اور جامعات کے درمیان مفاہمتی یادداشت پر دستخط

محکمہ بلدیات و دیہی ترقی خیبر پختونخوا اور جامعات کے درمیان مفاہمتی یادداشت ...

  

 پشاور( سٹاف رپورٹر ) خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر بلدیات و دیہی ترقی عنایت اللہ نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے صوبے کے عوام کو بنیادی سہولیات اور صاف ستھرا ماحول فراہم کرنے کا پختہ عزم کر رکھا ہے انہوں نے کہا کہ بڑے شہروں کی خوبصورتی و صفائی اور لوگوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے نہ صرف عملی کام جاری ہے بلکہ ماحول صاف رکھنے کیلئے عوامی شعور اجاگر کرنے کیلئے بھی اقدامات اُٹھائے گئے ہیں اور جلد ہی ہمارے صوبے کے شہر بھی قابل دیدہونگے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور میں صوبے کی دو عظیم جامعات عبدالولی خان یونیورسٹی مردان اور یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈٹیکنالوجی پشاور اور محکمہ بلدیات و دیہی تر قی کے مابین پینے کے صاف پانی اور ماحول کی صفائی کے منصوبوں سے متعلق مفاہمتی یادداشت پر دستخط کرنے کی تقریب سے بیحثیت مہمانِ خصوصی خطا ب کر تے ہوئے کیا۔مفاہمتی یادداشت پر محکمہ بلدیات کی طرف سے سیکرٹری لوکل کونسل بورڈ حضر حیات خان ، عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے رجسٹرار شیر عالم اور ڈائریکٹر نیشنل انسٹیٹیوٹ اربن انفراسٹرکچر پلاننگ ، یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈٹیکنالوجی پشاور کے راشد ریحان نے دستخط کئے۔ اس موقع پر سیکرٹری بلدیات سید جما ل الدین شاہ ،ڈبلیو ایس ایس پی کے چیف خان زیب اور محکمہ بلدیات و تعلیم کے متعلقہ آفسران بھی موجود تھے۔ اس موقع پر سیکرٹری لوکل کونسل بورڈ نے مفاہمتی یادداشت کے اغراض و مقاصد پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ مذکورہ جامعات کے مابین پہلی مرتبہ صوبے کے عوام کو پینے کے صاف پانی و صفائی ستھرائی کے شعبوں میں تعاون، تحقیق او راس سلسلے میں عوامی شعور کو اجاگر کرنے کیلئے مشترکہ کاوشیں کرنے کے بارے میں مفاہمتی یادداشت پر دستخط ہوئے جس کی مدت تین سال کیلئے ہے اور اس منصوبے میں توسیع بھی ہو سکے گی ۔ انہوں نے کہا کہ مفاہمتی یادداشت کی رو سے واٹسن سیل محکمہ بلدیات اور مذکورہ جامعات مشترکہ منصوبے ، تحقیق اور سیمینار کر سکیں گے اور لوگوں کو پانی ا ور صفائی ستھرائی کے شعبے میں بہتر سہولیات فراہم کرینگے اور ناگہانی آفات میں طلباء و طلبات کی صلاحیتوں کو استعمال میں لائینگے۔ تقریب سے عبدالولی خان یونیورسٹی مردان اور یونیورسٹی آف انجینئر نگ پشاور کے نمائندوں نے بھی خطا ب کیا۔واضح رہے کہ مذکورہ جامعات کے ساتھ مجوزہ منصوبوں کی تکمیل کیلئے یونیسیف کاتکنیکی و مالی تعاون بھی حاصل رہے گا۔سینئر وزیر بلدیات نے مذکورہ جامعات کے ساتھ مفاہمتی یادداشت کو بے حد سراہا اور اس ضمن میں اپنے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی

مردان(بیورورپورٹ) محکمہ بلدیات و دیہی ترقی گورنمنٹ آف خیبر پختونخوا ، عبدالولی خان یونیورسٹی مردان اور یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پشاور کے درمیان ایک مفاہمتی یاداشت پر دستخط ہوگئے۔اس موقع پر سینئر صوبائی وزیرِ بلدیات عنایت اللہ خان لوکل گورنمنٹ خیبر پختونخوا ، وائس چانسلر یو ای ٹی پشاور، رجسٹرار عبدالولی خان یونیورسٹی مردان پروفیسر شیر عالم خان ، سیکریٹری محکمہ بلدیات خیبر پختونخوا ، سینئر و اعلیٰ حکام ، فیکلٹی ممبران اوراین جی اوزکے نمائندوں کی کثیر تعداد موجود تھی۔اس معاہدے کی رو سے تینوں ادارے پانی، نکاسی آب اور صحت عامہ کے میدان میں ریسرچ و تحقیق میں ایک دوسرے کی مدد کرینگے۔اس معاہدے کی رو سے مشترکہ تحقیق ،سائنسی اور فنی معلومات کا باہمی تبادلہ کیا جائیگا۔اور مشترکہ طور پر کانفرنسز ، سیمنارز ، کورسز ، وفود کا تبادلہ اور ٹریننگ کا انعقاد کیا جائیگا اور ایک دوسرے کے تحقیق آلات کے استعمال تک رسائی ہوگی۔ اور مشترکہ طور پر طلباء باہمی تعاون سے مختلف پرجیکٹس کے ڈیزائن اور ترقی میں کام کرسکیں گے۔ اس موقع پر سینئرصوبائی وزیر عنایت اللہ خان نے کہا کہ انڈسٹری ، اکیڈیمیہ اور حکومت کے درمیان باہمی تعاون کو مزید بڑھانے کی ضرورت ہے۔ تاکہ عوام کے مسائل کے حل اور ملک و قوم کی ترقی کا سفر تیز تر کیا جائے اور باہمی تحقیق اور ریسرچ کے زریعے ترقی یافتہ اقوام کے صف میں شامل ہوں۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت پائیدار ترقی کے احداف کے خصول کے لئے کوئی کسر نہیں چھوڑے گی۔او ر صوبے میں پانی و صفائی کی صورت حال کو بہتر بنانے کے لئے ہر ممکن کوشش کریگی۔انہوں نے جامعات کے ساتھ مفاہمتی یاداشت کے حوالے سے واٹسن سیل اور دونوں جامعات کی متعلقہ زمہ داری کی کاوشوں کو سراہا اور اس ضمن میں محکمہ کی طرف سے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔سیکریٹری لوکل کونسل ووڈ نے تقریب کے شرکاء کو مفاہمتی یاداشت کے اعراض و مقاصد سے آگا کرتے ہوئے کہا کہ اس مفاہمتی یاداشت کی مدت تین سال کے لئے ہے۔جس میں اضافہ کیا جائیگا۔

پشاور( سٹاف رپورٹر )بلدیاتی نظام میں بہتری کے لئے جرمنی اور حکومت خیبر پختونخوا کے درمیان تین سالہ مفاہمتی یاداشت پر دستخط بدھ کے روز ہوئے جس کے تحت جرمنی اور سوئٹزر لینڈ کے مالی تعاون سے جی آئی زیڈ(GIZ) نے خیبر پختونخوا میں بلدیاتی نظام حکومت کی تکنیکی معاونت کے پروگرام لوگو(LOGO) کا آغاز کر دیا ہے۔لوگو(LoGo )پروگرام بلدیاتی اداروں کی خدمات کی فراہمی ،ان کے ذرائع آمدن و محاصل اور شہریوں کے ساتھ روابط میں بہتری کے لئے تکنیکی معاونت فراہم کرے گا۔ قبل ازیں سیکرٹری محکمہ بلدیات انتخابات و دیہی ترقی اور سیکرٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن خیبر پختونخوا نے ایک اعلیٰ سطح وفد کے ہمراہ جرمنی کے مختلف اداروں کا دورہ کیا ۔اس دورہ کے دوران جرمنی کی وفاقی وزارت برائے اقتصادی تعاون و ترقی (BMZ)اور جی آئی زیڈ کے سینئر عہدیداران کے ساتھ صلاح مشورہ کی روشنی میں اپنی سفارشات حکومت خیبر پختونخوا کو پیش کیں۔ان سفارشات کی روشنی میں صوبائی وزیر بلدیات اور وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا نے باقاعدہ طور پر لوگو(LoGo) پروگرام کی منظوری دی۔یہ پروگرام اصلاحات پر عمل درآمد کے ذریعے مقامی حکومتوں اور منتخب کونسلوں کی کارکردگی کو بہتر بنانے،مقامی سطح پر شراکتی منصوبہ بندی اور بجٹ سازی،صوبائی اور مقامی سطح پر محاصل اور آمدن میں بہتری اور شفافیت و جوابدہی کو یقینی بنانے کے لئے شہریوں اور حکومت کے درمیان روابط کی بہتری کے لئے بھرپور کردار اداکرے گا۔لوگو(LoGo) پروگرام وزارت خزانہ کے تحت اکنامک افیئر ز ڈویژن اور متعلقہ اداروں کے درمیان مفاہمت کے تحت خیبر پختونخوا میں بلدیاتی اداروں کی بہتری کے لئے کام کرے گا۔ یہ پروگرام ایڈیشنل چیف سیکرٹری محکمہ پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ خیبر پختونخوا کی زیر صدارت قائم کردہ سٹیئرنگ کمیٹی کی زیر نگرانی اپنے امور کو انجام دے گا۔یاد رہے محکمہ بلدیات انتخابات و دیہی ترقی خیبر پختونخوا کو سال2011سے مختلف شعبوں بشمول بلدیاتی ملازمین و منتخب نمائندگان کی تربیت،لوکل گورننس سکول کا قیام و استحکام،شراکتی منصوبہ بندی،ٹھوس فضلہ کے انتظام وغیرہ میں جرمن ادارے جی آئی زیڈ کی تکنیکی معاونت حاصل ہے

مزید :

صفحہ اول -