حاملہ خاتون کا حمل ضائع ہوگیا، پھر چند روز بعد دُکھ میں ڈوبی ڈاکٹر کے پاس چیک اپ کروانے گئی تو اس نے ایسی خوشخبری سنادی کہ زندگی کے سارے غم بھول گئی، کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا کہ۔۔۔

حاملہ خاتون کا حمل ضائع ہوگیا، پھر چند روز بعد دُکھ میں ڈوبی ڈاکٹر کے پاس چیک ...
حاملہ خاتون کا حمل ضائع ہوگیا، پھر چند روز بعد دُکھ میں ڈوبی ڈاکٹر کے پاس چیک اپ کروانے گئی تو اس نے ایسی خوشخبری سنادی کہ زندگی کے سارے غم بھول گئی، کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا کہ۔۔۔

  

لندن (نیوز ڈیسک)اسقاط حمل کسی بھی حاملہ خاتون کے لئے ایک بھیانک تجربہ ثابت ہوتا ہے جس کی دردناک یادیں مدتوں اس سے غمزدہ رکھتی ہیں۔ برطانوی خاتون کرینہ مارشل کو بھی اسی بدقسمتی کا سامنا کرنا پڑ گیا، جس پر وہ اور ان کے شریک حیات کیران مورس بہت غمزدہ تھے۔ وہ شدت سے اولاد کے خواہاں تھے لیکن اسقاط حمل کی وجہ سے ان کا یہ خواب چکناچور ہوگیا۔ اسی غم کی حالت میں کرینہ کچھ روز بعد ہسپتال معائنے کے لئے گئیں، لیکن ڈاکٹر نے ایسا حیرتناک انکشاف کردیا کہ غمزدہ خاتون آن واحد میں دنیا کی خوش قسمت ترین خاتون بن گئیں۔

پاکستان کے ہمسایہ ملک میں قائم بچے پیدا کرنے کی فیکٹری، ایک بچہ پیدا کرنے کے کتنے پیسے دینے پڑتے ہیں؟ ایسی تفصیلات کہ آپ سوچ بھی نہیں سکتے

کرینہ کو بتایا گیا کہ اسقاط حمل کے بعد بھی وہ حاملہ تھیں۔ کرینہ اور ان کے خاوند کی خوشی کی انتہاءنہ تھی، البتہ ان کے لئے یہ انکشاف ناقابل فہم تھا۔ ڈاکٹر نے انہیں بتایا کہ دراصل کرینہ جڑواں بچوں کے ساتھ حاملہ تھیں، جن میں سے ایک اسقاط حمل کے ساتھ ضائع ہوگیا لیکن خوش قسمتی سے دوسرابچہ متاثر نہیں ہوا تھا۔

کرینہ کا کہنا تھا کہ اسقاط حمل کے بعد انہیں یوں محسوس ہوتا تھا کہ گویا وہ تباہ ہو گئی ہوں، لیکن اس غیر متوقع بچے کی خوشخبری سن کر ایسا لگتا ہے کہ وہ چاند سے بھی آگے کہیں خلاءمیں خوشی سے تیر رہی ہوں۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ وہ اس معاملے کی وضاحت نہیں کرسکتے کہ کس طرح اسقاط حمل میں ایک بچہ ضائع ہوگیا اور دوسرا بخیروعافیت رہا، لیکن خوش قسمتی سے ہوا یہی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس