انصاف کی توقع ہے ، نواز شریف کوٹ لکپت جیل سے جناح ہسپتال منتقل

انصاف کی توقع ہے ، نواز شریف کوٹ لکپت جیل سے جناح ہسپتال منتقل

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ ملک و قوم کی خدمت کرنیوالوں کو ہی آزمائشیں کا سامنا کرنا پڑتا ہے، شہباز شریف سرخرو ہو کر باہر آگئے اور مجھے بھی عدالت سے انصاف کی توقع ہے۔علاج کیلئے جیل سے جناح ہسپتال منتقلی کے موقع پر صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف نے کہا کہ مجھے یہ اطمینان ہے کہ عوام کے سامنے سرخرو ہوں، جیت ہمیشہ حق اور سچ کی ہی ہوتی ہے، ملک و قوم کی خدمت کرنے والوں کو ہی آزمائشیں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔شہباز شریف کی ضمانت منظور ہونے پر نواز شریف نے کہا کہ شہباز شریف سرخرو ہو کر باہر آئے اور مجھے بھی عدالت سے انصاف کی توقع ہے۔دوسری طرف کوٹ لکھپت جیل میں طبی معائنے کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف کو جناح ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔اس موقع پر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ جیل ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف ہسپتال جانے کیلئے راضی نہیں تھے، نواز شریف چاہتے ہیں کہ ان کا علاج جیل میں ہی ہو یا پھر لندن میں پہلے والے معالج کے پاس ہو جن سے وہ پہلے علاج کرا چکے ہیں۔جیل ذرائع کا کہنا ہے کہ جناح اسپتال روانگی سے قبل ڈاکٹرز نے سابق وزیراعظم نواز شریف کا طبی معائنہ کیا، نواز شریف کے بلڈ پریشر اور شوگر سمیت دیگر ٹیسٹ کیے گئے جب کہ نواز شریف کو ہلکا بخار بھی تھا۔ذرائع کے مطابق جناح ہسپتال میں سکیورٹی کے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں، ہسپتال میں تین شفٹوں میں اہلکار تعینات کیے جائیں گے، ایلیٹ فورس اور سادہ لباس میں الگ الگ نفری تعینات ہوگی جب کہ نواز شریف کے کمرے کو سب جیل ڈکلیئرکردیا جائے گا۔پولیس کے مطابق نواز شریف کے وارڈ کے باہر جیل عملہ تعینات ہوگا، صرف حکومت کے تشکیل کردہ ڈاکٹرز کے بورڈ کو کمرہ تک رسائی ہوگی، نواز شریف کے کمرے کو جانے والے راستے پر تمام ڈاکٹرز اور رشتہ داروں کی 3 جگہ چیکنگ کی جائے گی۔جناح ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈ نٹ نے اپنے دفتر میں نصب ایل ای ڈی کو سابق وزیر اعظم نواز شریف کیلئے مختص کردہ کمرے میں منتقل کر دیا۔ اس موقع پر جناح ہسپتال کے پرنسپل میڈیکل کالج عارف تجمل کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو ہمیں وہ جگہ دہی ہے جہاں انہیں آرام پہنچایا جا سکے۔ ہم ان کے لئے وہ کمرہ دیکھ رہے ہیں جہاں طبی سہولتیں قریب ہوں اور اگر نواز شریف کے علاج کے لئے کسی دوسرے ادارے کی خدمت لینا پڑیں تو وہ بھی لیں سکے۔

نوازشریف

مزید : صفحہ اول


loading...