سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان ‘ انٹرنیشنل فنانشل رپورٹنگ سٹینڈرڈ نمبر9کا اطلاق موخر

سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان ‘ انٹرنیشنل فنانشل رپورٹنگ ...

ملتان (نیوز رپورٹر) سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان نے تمام ایسی کمپنیوں کے لئے جنہیں اپنے سالانہ مالی حسابات انٹر نیشنل فنانشل رپورٹنگ سٹینڈرڈز (بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

(IFRS) کے مطابق تشکیل دینا ہوتی ہیں، کے لئے مالیاتی انسٹرومنٹ سے متعلق انٹر نیشنل فنانشل رپورٹنگ کے سٹینڈرڈ نمبر 9 کا اطلاق مؤخر کر دیا ہے۔ یہ فیصلہ کمپنیوں کے مطالبے اور انسٹی ٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاوئنٹنٹ کی تجویز پر کیا گیا ہے ایس ای سی پی نے 4 اکتوبر 2017 کو جاری کئے گئے ایک نوٹیفیکیشن(SRO 1007(I)/2017 ) کے ذریعے انٹر نیشنل فنانشل رپورٹنگ سٹینڈرڈ نمبر 9 کویکم جولائی 2018 سے لاگو کیا تھا۔ ا?ئی ایف ا?ر ایس نمبر 9 کا اطلاق انٹر نیشنل اکاو?نٹنگ سٹینڈرڈ نمبر 39 (IAS۔39) کی جگہ کیا گیا تھا کمپنیوں کو جولائی 2018 کے بعد سے فنانشل سٹیٹمنٹ کی تیاری آئی ایف آر ایس نمبر 9 کے مطابق کرنا تھی تاہم کئی کمپنیوں نے ایس ای سی پی سے رابطہ کیا اور مجوزہ سٹینڈرڈ نمبر 9 کے اطلاق کو موخر کرنے کی درخواست کی کیونکہ اس سٹینڈرڈ پر عمل درآمد کے لئے متعلقہ معلومات، ڈیٹا، تخمینے دستیاب نہیں اور اس کی وجہ سے فنانشل سٹیٹمنٹ کی تیاری میں زیادہ وقت صرف ہو رہا ہے اور کمپنیوں کو مشکلات پیش ا? رہی ہیں۔ ایس ای سی پی نے انسٹی ٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاؤئنٹنٹ کی تجویز پر جون 2019 میں ختم ہونے والے مالی سال کے لئے آئی ایف آر ایس نمبر 9 کا اطلاق موخر کر دیا ہے امید ہے کمپنیاں اس سہولت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنی فنانشل سٹیٹمنٹ بروقت مکمل کریں گے اور آئندہ مالی سال میں آئی ایف آر ایس نمبر 9 کے مطابق فنانشل سٹیٹمنٹ کی تیاری کے لئے اقدامات کریں گی۔ تاہم کمپنیاں اس سال بھی آئی ایف آر ایس نمبر 9 کے مطابق اپنے فنانشلز جمع کروا سکتی ہیں۔ کمپنیز ایکٹ کی دفعہ 225 کے تحت ایس ای سی پی کو کمپنیوں کی فنانشل سٹیٹمنٹ کو معیاری بنانیکے لئے اکاو?نٹنگ سٹینڈرز جاری کرنے کا اختیار ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...