نعیم الحق کا انتقال لیکن دراصل وہ کب سے خون کے سرطان کے مریض تھے؟ جان کر آپ کی آنکھیں بھی نم ہوجائیں گی 

نعیم الحق کا انتقال لیکن دراصل وہ کب سے خون کے سرطان کے مریض تھے؟ جان کر آپ ...
نعیم الحق کا انتقال لیکن دراصل وہ کب سے خون کے سرطان کے مریض تھے؟ جان کر آپ کی آنکھیں بھی نم ہوجائیں گی 

  



کراچی (ویب ڈیسک)نعیم الحق گزشتہ کئی روز کراچی کے آغا خان ہسپتال میں زیر علاج تھے،جہاں وہ انتقال کرگئے، ان کی نماز جنازہ اتوار کو عصر کے بعد کراچی میں ادا کی جائے گی ، جنوری 2018ء میں نعیم الحق کو خون کےسرطان کا مرض تشخیص کیا گیا۔

نعیم الحق 11جولائی 1949ء کو کراچی میں پیدا ہوئے، وہ پیشے کے اعتبار سے بینکر اور کاروباری شخصیت تھے۔نعیم الحق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)کے بانی رکن سمجھے جاتے تھے ، انہوں نے جامعہ کراچی سے انگلش لٹریچرمیں ماسٹرز،ایس ایم لاء کالج سے ایل ایل بی کیا۔

نعیم الحق نیویارک کے یو این پلازہ میں نیشنل بینک کی شاخ قائم کرنےوالی ٹیم کا حصہ رہے۔انہوں نے نے 1980ء میں بطور مرچنٹ بینکر لندن میں رہائش اختیارکی ۔

نعیم الحق نے 1984ء میں ایئرمارشل اصغرخان کی تحریک استقلال جوائن کی اور کراچی آگئےاور 1988 میں تحریک استقلال کے ٹکٹ پر اورنگی سے الیکشن بھی لڑا۔

نعیم الحق نے1996 میں عمران خان کے ساتھ پاکستان تحریک انصاف کی بنیاد رکھی، 2012 میں نعیم الحق تحریک انصاف چیئرمین کے چیف آف اسٹاف بن کر اسلام آباد منتقل ہوگئے ، وہ پارٹی کی کور کمیٹی کا حصہ اور انفارمیشن سیکریٹری بھی رہے۔

مزید : قومی