کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کوابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے: شاہ محمود قریشی

کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کوابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے: شاہ محمود قریشی
کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کوابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے: شاہ محمود قریشی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ تنازع کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کوابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے،پاکستانی قوم اور کشمیری عوام حق خود ارادیت کا وعدہ پورا ہونے کے منتظر ہیں، پاکستانی قوم نے اپنے مصیبت زدہ افغان بھائیوں بہنوں کی کھلے دل سے مدد کی،45 لاکھ افغان مہاجرین کیلئے 4 دہائیوں سے زائد عرصے سے پاکستان دوسرا گھر ہے۔

اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری انتونیو گوتریس کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیر اعظم کی قیادت میں پاکستانی حکومت پر امن ہمسائیگی پر یقین رکھتی ہے، ہمارے امن پسندی کے پیغام کو بدقسمتی سے ہماری کمزوری سمجھاگیا، بھارت کی جانب سے ایل او سی پرجنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں اضافہ ہوا، بھارت کی جانب سے عام شہریوں کو شہید کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں وکشمیرمیں بھارتی افواج کی انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کی مذمت کرتے ہیں، 200 دن گزرنے کے باوجود 80 لاکھ سے زائد کشمیری قیدوبنداورمواصلاتی قدغنوں کاشکارہیں،9 لاکھ بھارتی قابض افواج نے مقبوضہ جموں وکشمیر کا محاصرہ کیا ہوا ہے،مقبوضہ جموں وکشمیر آج دنیا میں سب سے بڑا ملیٹرائیزڈ زون بن چکا ہے۔8 اگست کو سیکریٹری جنرل کے بیان سے تنازع کشمیر پر یو این کے موقف کی توثیق ہوئی، تنازع کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کوابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے،پاکستانی قوم اور کشمیری عوام حق خود ارادیت کا وعدہ پورا ہونے کے منتظر ہیں۔

افغان مہاجرین کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اوراقوام متحدہ 4 دہائیوں سے مل کر افغان مہاجرین کی مدد کررہے ہیں، پاکستانی قوم نے اپنے مصیبت زدہ افغان بھائیوں بہنوں کی کھلے دل سے مدد کی،45 لاکھ افغان مہاجرین کیلئے 4 دہائیوں سے زائد عرصے سے پاکستان دوسرا گھر ہے، پاکستان آج بھی 27 لاکھ افغان مہاجرین کی میزبانی کا فرض ادا کررہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عالمی امن وسلامتی پاکستان اور اقوام متحدہ کی مشترک خواہش ومقصد ہے،ہمیں فخر ہے کہ 78 پاکستانی خواتین یواین کے امن فوجی دستوں میں خدمات سر انجام دے رہی ہیں، پاکستان دنیا کے 5 سب سے زیادہ فوجی دستے فراہم کرنے والے ممالک میں شامل ہے۔

مزید : اہم خبریں /قومی