بنوں میں کھلی کچہری کا  انعقاد،مسائل کے انبار

بنوں میں کھلی کچہری کا  انعقاد،مسائل کے انبار

  

بنوں (ڈسٹرکٹ رپورٹر) صوبائی حکومت کے احکامات کی پیروی کرتے ہوئیتاریخ میں پہلی بارکمشنر بنوں ڈویژن شوکت علی یوسفزئی نے وزیر سب ڈویژن مہمندخیل میں کھلی کچہری کا انعقاد کیا۔ڈویژنل کمشنر بنوں شوکت علی یوسفزئی نے کہا ہے کہ حکومت کا  اپنے شہریوں کو ان کے بنیادی ضروریات کی فراہمی اولین ترجیح ہے۔جس کو پورا کرنے کیلئے کھلی کچہری کا انعقاد کیا جاتا ہے۔تاکہ مسائل نوٹ کرکے یکمشت حل کرنے کے احکامات جاری کئے جا سکیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے تاریخ میں پہلی بار وزیر سب ڈویژن بنوں  علاقہ مہمند خیل میں منعقدہ کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر وزیر ٹرانسپورٹ ملک شاہ محمد خان، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر بنوں محمد شبیر خان، ایسی آر عزیزاللہ جان ایس۔پی پولیس۔ضیاء، اسسٹنٹ کمشنر وزیر سب ڈویژن بنوں محمد قمر  اور لائین ڈیپارٹمنٹ کے سربراہان اور عوام کی کثیر تعداد موجود تھی۔کمشنر بنوں ڈویژن شوکت علی یوسفزئی نے علاقہ مہمندخیل کے عمائدین اور شریک عوام کے مسائل سنے اور ان کے حل کرنے کیلئے موقع پر احکامات جاری کیے۔ اس موقع پر مہمندخیل کے عمائدین نے کھلی کچہری کے انعقاد پر خوشی کا اظہارکیا۔اس دوران اپنے مسائل اور مطالبات بیان کرتے ہوئے ملک میر شمد خان کہا۔کہ ہمارے علاقے میں قیام امن کے بعد ایک سنگین مسلۂ اس علاقے نشہ اور اشیاء کا تیار ہونا اور منشیات فروشی کا ہے۔ اس کے علاؤہ کیڈٹ کالج کے قیام میں علاقہ مہمندخیل کو نوکریوں اور طلباء کے داخلوں میں کوٹہ مختص کیجائے۔ اس کے علاؤہ تجاوزات کا خاتمہ اور پینے کے صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جاسکے،کمشنر بنوں ڈویژن شوکت علی یوسفزئی نے کھلی کچہری سے خطاب میں کہا کہ منشیات فروشی کو پولیس،مقامی خاصہ داروں کے علاؤہ پاک فوج سے بھی تعاون حاصل کرکے اس ناسور سے چٹکارا حاصل کرنا اولین ترجیح ہے۔انہوں نے کہا کہ تجاوزات کے خاتمہ اور سڑکوں کی کشادگی پر کام شروع ہو چکا ہے۔ اس کے علاؤہ علاقہ بکاخیل اور مہمند خیل میں باؤنڈری لائین کے تنازع کو فوری حل کرنے کیلئے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر بنوں محمد شبیر خان کی سربراہی میں ریوینیو افسران پر مشتمل کمیشن کے قیام کا اعلان کیا۔جوباونڈری لائین کے تنازعے کو ہمیشہ کیلئے حل کرے۔ کمشنر بنوں شوکت علی یوسفزئی نے کہا کہ قیام امن کے بعد یہاں ٹورزم ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے منصوبوں کو عملی جامہ پہنایا جائے گا۔ تاکہ علاقے کی پسماندگی کا خاتمہ ہوکر معاشی سرگرمیاں شروع ہو سکیگی۔ آخر میں تمام مسائل اور مطالبات پر فوری احکاماتِ جاری کرنے پر عمائدین علاقہ اور عوام کی کثیر تعداد نے ڈویژنل انتظامیہ کا پہلی بار کھلی کچہری کے انعقاد پر بھرپور خراج تحسین پیش کیا۔ اور حکومت کے ساتھ ہر قسم کے تعاون کا یقین دہانی کرائی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -