خواجہ سراؤں کے حقوق: وفاقی اورپنجاب حکومت کے وکلاء بحث کیلئے طلب

  خواجہ سراؤں کے حقوق: وفاقی اورپنجاب حکومت کے وکلاء بحث کیلئے طلب

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے خواجہ سراؤں کو اسمبلی میں نمائندگی دینے اور بنیادی آئینی حقوق کیلئے دائر درخواست پر وفاقی اورپنجاب حکومت کے وکلاء کو 16 اپریل کو حتمی بحث کے لئے طلب کر لیا ہے،مسٹرجسٹس شمس محمود مرزا نے عاطف ستار ارائیں ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی،درخواست گزارکا موقف ہے کہ معاشرے میں رہنے والے خواجہ سراؤں کو ہیجڑا اورکھسراجیسے نازیبا ناموں سے پکارا جاتا ہے، پاکستان میں خواجہ سراؤں کو بنیادی شہری حقوق میسر نہیں، خواجہ سراؤں کو حج اور عمرے کے لئے مناسب مواقع دستیاب نہیں ہیں، سینیٹ،قومی و صوبائی اسمبلی میں مناسب نمائندگی نہ ہونے سے خواجہ سراؤں کی زندگی مشکلات سے بھرپور ہے، معاشرے میں خواجہ سراؤں کی عزت اور تکریم بھی نہیں کی جاتی، عدالت سے استدعاہے کہ خواجہ سراؤں کے بنیادی حقوق کے تحفظ،خواجہ سراؤں کو ادویات، لباس اور دیگر ضروریات زندگی کی اشیاء کی خریداری میں سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس سے استثنیٰ دیا جائے،درخواست میں مزید استدعا کی گئی ہے کہ خواجہ سراؤں پر ہونے والے ہر قسم کے تشدد کوبھی روکنے کا حکم دیا جائے۔

خواجہ سراء

مزید :

صفحہ آخر -