کارباری ہفتے کے پہلے روز سٹاک مارکیٹ میں زبر دست تیزی، انڈیکس 567.23پوائنٹس بڑھ گیا

کارباری ہفتے کے پہلے روز سٹاک مارکیٹ میں زبر دست تیزی، انڈیکس 567.23پوائنٹس ...

  

 کراچی ( اکنامک رپورٹر) پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں پیر کو زربردست تیزی کا رجحان رہا اور کے ایس ای100انڈیکس 46ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حد عبور کر گئی،500سے زائد پوائنٹس کے اضافے سے انڈیکس 46300پوائنٹس کی سطح پر بند ہواجبکہ 86ارب روپے کے اضافے سے مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ83کھرب روپے سے تجاوز کر گیا،کاروباری تیزی کے سبب 61فیصد حصص کی قیمتیں بھی بڑھ گئیں۔سرمایہ کاروں اور مالیاتی اداروں کی ٹیلی کام،سیمنٹ،فوڈز اور اسٹیل کے شعبوں میں سرمایہ کاری اور خریداری میں تیزی آنے کے سبب پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں پیر کوکاروباری سرگرمیاں عروج پر رہی اور کے ایس ای100انڈیکس 45900،46000،46100،46200اور46300پوائنٹس کی 6بالائی حد عبور کرنے میں کامیاب رہا۔پیر کو کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس میں 567.23پوائنٹس کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے انڈیکس 45808.36پوائنٹس سے بڑھ کر 46375.59پوائنٹس پر بند ہوا جبکہ 242.61پوائنٹس کے اضافے سے کے ایس ای30انڈیکس 19104.50پوائنٹس سے بڑھ کر 19347.11پوائنٹس پر آگیا اسی طرح کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 31552.69پوائنٹس سے بڑھ کر 31891.80پوائنٹس پر جا پہنچا۔کاروباری تیزی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 86ارب70کروڑ84لاکھ3ہزار946روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 82کھرب41ارب 48کروڑ73لاکھ 83ہزارروپے سے بڑھ کر 83کھرب28ارب 19کروڑ57لاکھ 87ہزار424روپے ہو گیا۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں پیر کو 24ارب روپے مالیت کے 48کروڑ63لاکھ 75ہزار حصص کے سودے ہوئے جبکہ گذشتہ ہفتہ کاروبار کے آخری دن جمعہ کو 20ارب روپے مالیت کے 44کروڑ27لاکھ16ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 46507پوائنٹس کی بلند سطح کو بھی چھو گیا تھا۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں پیر کو مجموعی طور پر 405کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 246کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ،141میں کمی اور 18کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔کاروبار کے لحاظ سے ورلڈ کال ٹیلی کام 4کروڑ3لاکھ،میپل لیف 3کروڑ56لاکھ،ٹیلی کارڈ لمیٹڈ 2کروڑ87لاکھ،ازگارڈنائن 2کروڑ30لاکھ اور ہم نیٹ ورک 2کروڑ16لاکھ حصص کے سودوں سے سرفہرست رہے۔قیمتوں میں اتار چڑھا? کے اعتبار سے باٹا پاک کے حصص کی قیمت میں 90.40روپے کا اضافہ ہوا جس سے اسکے حصص کی قیمت بڑھ کر 1769.80روپے ہو گئی اسی طرح 60.33روپے کے اضافے سے سیفائر ٹیکسٹائل کے حصص کی قیمت بڑھ کر 989.00روپے ہو گئی جبکہ انڈس ڈائنگ کے حصص کی قیمت میں 28.90روپے کی نمایاں کمی واقع ہوئی جس سے اسکے حصص کی قیمت گھٹ کر 611.00روپے ہو گئی اسی طرح 25.99روپے کی کمی سے کولگیٹ پامولیو کے حصص کی قیمت کم ہو کر 2800.01روپے پر آ گئی. انٹر بینک اور مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں کاروباری ہفتہ کے پہلے روز ڈالر کے سامنے پاکستانی روپیہ کی قدر گراوٹ کا شکار رہی جس کے باعث ڈالر کی قدر میں اضافے کا رجحان دیکھا گیا۔فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق پیر کو انٹر بینک میں روپے کے مقابلے ڈالر کی قدر میں 45پیسے کااضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے ڈالر کی قیمت خرید 158.85روپے سے بڑھ کر159.30روپے اور قیمت فروخت158.95روپے سے بڑھ کر159.40روپے ہو گئی اسی طرح مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر20پیسے بڑھ گئی جس سے ڈالر کی قیمت خرید158.90روپے سے بڑھ کر159.10روپے اور قیمت فروخت159.20روپے سے بڑھ کر159.40روپے پر جا پہنچی۔فاریکس رپورٹ کے مطابق یورو اور برطانوی پونڈ کی قدر میں بھی بالترتیب 50پیسے اور1روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے یورو کی قیمت فروخت 192.50روپے سے بڑھ کر193روپے ہو گئی اسی طرح برطانوی پونڈ کی قیمت خرید 218.50روپے سے بڑھ کر219روپے اور قیمت فروخت220روپے سے بڑھ کر221روپے کی بلند سطح پر جا پہنچی۔عالمی مارکیٹ میں پیر کو فی اونس سونا4ڈالر ستا ہو کر1820ڈالر فی اونس ہو گیا جس کے بعد ملکی صرافہ مارکیٹوں میں بھی سونے کی قیمت میں کمی کا رجحان رہا۔آل پاکستان سپریم کونسل جیولرز ایسوسی ایشن کی رپورٹ کے مطابق پیر کو ملکی صرافہ مارکیٹوں میں ایک تولہ سونے کی قیمت 200 کی کمی سے 1لاکھ11ہزار50روپے ہو گئی اسی طرح172روپے کی کمی سے دس گرام سونے کی قیمت95ہزار207روپے پر آ گئی۔

سٹاک مارکیٹ

مزید :

صفحہ آخر -