بروقت تشخیص سے بچوں میں کینسر کا علاج ممکن ہے، ڈاکٹر رابعہ ولی 

بروقت تشخیص سے بچوں میں کینسر کا علاج ممکن ہے، ڈاکٹر رابعہ ولی 

  

  

لاہور(سٹی رپورٹر)ہر سال 15فروری کو دنیا بھر میں بچوں کے کینسر کا عالمی دن منایا جاتاہے۔اس دن کو منانے کا مقصد یہ ہے کہ بچوں میں پائے جانے والے کینسر کی اقسام، ان کی علامات اور کینسر ہو جانے کی صورت میں اس کے علاج کے بارے میں زیادہ سے زیادہ آگاہی پھیلائی جا سکے۔ ترقی یافتہ ممالک کے بچوں میں کینسر سے صحتیاب ہونے کی شرح تقریباً 80فیصد ہے جبکہ یہ شرح پاکستان اور دیگر کم ترقی یافتہ ممالک میں صرف 20فیصد ہے۔ اس حوالے سے شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر کی کنسلٹنٹ پیڈیاٹرک اونکالوجی، ڈاکٹر رابعہ ولی کا کہنا تھا کہ بچوں کا کینسر بڑوں کی نسبت مختلف ہوتاہے کیونکہ عموماًبچوں میں کینسر کی وجوہات نا معلوم ہی ہوتی ہیں۔ بڑوں کے بر عکس بچوں میں کینسر سے ان کے طرز زندگی سے کا بھی تعلق نہیں ہوتااور نہ ہی عام طور پر بچوں کے کینسر کی سکریننگ ممکن ہوتی ہے۔لیکن اس سب کے باوجود ہم ایسے اقدامات ضرور کر سکتے ہیں جن سے ان بچوں کے کینسر سے صحتیاب ہونے اور ایک اچھی زندگی گزارنے کے امکانا ت بڑھ سکتے ہیں۔ بچوں کے کینسر کے عالمی دن کے موقع پر اس بات کی آگاہی پھیلانا انتہائی ضروری ہے کہ کینسر کی بر وقت تشخیص کی صورت میں اس کا کامیاب علاج ہوناعین ممکن ہے۔ کینسر کے مریض یا اس سے صحت یاب ہونے والے بچوں کے بارے میں بھی ہمارے معاشرے میں بہت سے غلط تصورات پائے جاتے ہیں جنہیں ختم کرنا ضروری ہے۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -