آسٹریا میں گیسٹرونومی کھولنے کا مطالبہ سامنے آگیا

آسٹریا میں گیسٹرونومی کھولنے کا مطالبہ سامنے آگیا
آسٹریا میں گیسٹرونومی کھولنے کا مطالبہ سامنے آگیا

  

ویانا(المیر باجوہ) ڈبلیو کے او پلکر اور کراوس ونکلر نے کہا کہ اب ہمیں گیسٹرونومی کو کھولنے کی تاریخ اور فریم ورک کے حالات کے بارے میں فیصلے کی ضرورت ہے۔

کورونا بحران کے آغاز کے بعد سے مجموعی طور پر 6 ماہ سے زیادہ کا لاک ڈاون کافی ہے۔ لہذا یہ خاص طور پر تکلیف دہ ہے کہ اب بھی سیاحت کی صنعت گیسٹرونومی اور ہوٹل کے دوبارہ کھولنے کا کوئی امکان نہیں ہے۔ ماریو پلکر اور سوسن کراوس نے تبصرہ کیا۔ آسٹرین چیمبر آف کامرس (ڈبلیو کے) کی میزبانی کی میٹنگ میں پیشہ ورانہ انجمنوں کے نمائندے ونکلر ، کیٹرنگ اور ہوٹل کی صنعت کے نمائندگان نے کہا کہ اصولی طور پر حکومت نے فروری کے وسط کے لیے ایک افتتاحی تاریخ یا کم از کم ایک ٹائم ٹیبل کا اعلان کیا تھا۔

 ماریو پلکرہماری کمپنیاں جن میں سے بہت سے افراد پہلے ہی معاشی اور نفسیاتی طور پر انتہائی کشیدہ صورتحال میں ہیں فوری طور پر اس بات کا اہل بننے کی ضرورت ہے کہ معاملات کس طرح جاری رہیں گے۔ وائرس اور کوئی بھی تغیر ہمارے ساتھ زیادہ لمبے عرصے تک رہے گا لہذا ہمیں لازمی ہے کہ قابل عمل طریقے تلاش کریں کسی بھی صورت میں یہ حفاظتی ٹیکے لگانے تک اور مقامی وائرس کی تغیرات کو کامیاب قابو پانے تک مقامی ریسٹورنٹ کو بند رکھنے کا کوئی حل نہیں ہوسکتا۔ہمارے ممبر ماضی میں ہی ثابت کرچکے ہیں کہ حفاظت اور حفظان صحت کے ضوابط مستقل طور پر برقرار رکھنے میں کامیاب ہو چکے ہیں۔

 اور سوسن کراوس ونکلر مزید کہتے ہیں کہ صنعت میں ہم امکانات کی بڑھتی ہوئی کمی کے ساتھ جدوجہد کر رہے ہیں جس میں بہت سے معاملات میں کمپنیوں اور ملازمین کی صنعت کے وجودی خوف کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے۔ چھ ہفتہ قبل ہم نے وزارت صحت کو متعدد مخصوص نظریات اور تجاویز دی تھیں جیسے کہ مہمانوں کی جانچ کی ضرورت ہے مگر افسوسناک یہ ہے کہ بظاہر آج تک ہمارے تصورات کے بارے میں کوئی تفصیلی گفتگو نہیں کی گئی اور نہ ہی ہمیں جواب دیا گیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -