جوانی میں زیادہ پارٹی کرنے کے بڑھاپے میں نقصانات تازہ تحقیق میں سامنے آگئے

جوانی میں زیادہ پارٹی کرنے کے بڑھاپے میں نقصانات تازہ تحقیق میں سامنے آگئے
جوانی میں زیادہ پارٹی کرنے کے بڑھاپے میں نقصانات تازہ تحقیق میں سامنے آگئے
سورس:   Pxhere

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) نوعمری میں کثرت سے پارٹی کرنے اور دل کی بیماریوں کے درمیان سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں ایسے خطرناک تعلق کا انکشاف کر دیا ہے کہ سن کر نوجوان پارٹی میں جانے سے خوف کھانے لگیں گے۔ میل آن لائن کے مطابق امریکہ کی لوئزیانا سٹیٹ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے 10لاکھ سے زائد لوگوں پر کی جانے والی اس تحقیق کے نتائج میں بتایا ہے کہ نوعمری میں ’ہارڈ پارٹی‘ (پارٹی میں حد سے زیادہ رقص کرنا، غیرصحت مندانہ کھانے کھانا اور سگریٹ و شراب نوشی وغیرہ)کرنے سے دل کی جان لیوا بیماریوں میں مبتلا ہونے کا خطرہ 9گنا تک بڑھ جاتا ہے اور قبل از وقت موت کا خطرہ سر پر منڈلانے لگتا ہے۔

اس تحقیق میں سائنسدانوں نے 10لاکھ سے زائد امریکی شہریوں کے عمر کی 20اور 30کی دہائی میں پارٹی کرنے کے معمول اور آئندہ زندگی میں انہیں لاحق ہونے والی دل کی بیماریوں کے کا تجزیہ کرکے نتائج مرتب کیے ہیں، جن میں بتایا گیا ہے کہ جو لوگ عمر کی بیس اور تیس کی دہائی میں ہارڈ پارٹی کرتے رہے انہیں بڑھتی عمر میں دل کی بیماریاں9گنا زیادہ لاحق ہوئیں اور ان میں قبل از وقت موت کی شرح بھی کئی گنا زیادہ پائی گئی۔تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر انتھونی وائن کا کہنا تھا کہ خواتین میں ہارڈ پارٹی کے یہ نقصانات مردوں سے کہیں زیادہ پائے گئے۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -