سائنسدانوں نے وزن کم کرنے کا آسان ترین لیکن انتہائی غلیظ طریقہ ایجاد کرلیا، جان کر آپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

سائنسدانوں نے وزن کم کرنے کا آسان ترین لیکن انتہائی غلیظ طریقہ ایجاد کرلیا، ...
سائنسدانوں نے وزن کم کرنے کا آسان ترین لیکن انتہائی غلیظ طریقہ ایجاد کرلیا، جان کر آپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) موٹاپے سے نجات کے لیے مارکیٹ میں کئی طرح کی ادویات دستیاب ہیں جنہیں فربہ لوگ ہاتھوں ہاتھ لیتے ہیں مگر اب ماہرین نے موٹاپا کم کرنے کے لیے ایک ایسی غلیظ ترین دوا بنا ڈالی ہے کہ جس کے متعلق جان کر کوئی بھی اسے کھانے کی بجائے شاید موٹا ہی رہنے کو ترجیح دے گا کیونکہ ماہرین نے یہ گولی انسانی فضلے سے تیار کی ہے۔

ہارورڈ میڈیکل سکول ماہرین کا کہنا ہے کہ ”آنتوں میں پائے جانے والے خاص قسم کے بیکٹیریا موٹاپے پر اثرانداز ہوتے ہیں اور اگر کسی دبلے پتلے شخص کی آنتوں کے بیکٹیریا کسی موٹاپے کے شکار شخص میں منتقل کیے جائیں تو وہ بھی دبلا پتلا ہو جائے گا۔ “اپنے اسی مفروضے پر تحقیق کرتے ہوئے ماہرین نے یہ کیپسول ایجاد کیا ہے جس کا نام ”فیکل مائیکروبوئیٹا ٹرانسپلانٹ کیپسول“ (Faecal microbiota transplant capsule)رکھا گیا ہے۔

مزید جانئے: یہ خاتون ایک سال تک روزانہ گرم پانی اور شہد پیتی رہی، اس دوران جسم میں کیا تبدیلی آئی تفصیلات جان کر آپ آزمانے پر مجبور ہوجائیں گے

امریکی شہر بوسٹن میں واقع میساچوسٹس جنرل ہسپتال رواں سال مارچ سے اس دوا کے مریضوں پر تجربات شروع کرے گا۔ ہارورڈ میڈیکل سکول کی اسسٹنٹ پروفیسر اور تحقیقاتی ٹیم کی سربراہ ایلین یو کا کہنا ہے کہ ”چھوٹے پیمانے پر ایک تحقیق میں پہلے ہی ثابت ہو چکا ہے کہ آنتوں کے بیکٹیریا کوایک شخص سے دوسرے شخص میں منتقل کرنے سے نظام انہضام متاثر ہوتا ہے۔ “ یہ کیپسول بنانے والی کمپنی اوپن بائیوم (OpenBiome) کے چیف میڈیکل آفیسر زین قسام کا کہنا ہے کہ ”میں اپنے تخیل میں مستقبل قریب میں ایک ایسی دنیا دیکھ رہا ہوں جس میں موٹاپے کے خاتمے کے لیے مائیکروبائیل طریقہ علاج دیگر تمام غذاﺅں اور ورزشوں کے طریقوں پر حاوی ہو جائے گا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس