یو ایس پاکستان بزنس کونسل کے 26 رکنی تجارتی وفد کا اسلام آباد کا دور

یو ایس پاکستان بزنس کونسل کے 26 رکنی تجارتی وفد کا اسلام آباد کا دور

اسلام آباد (اے پی پی) انفارمیشن ٹیکنالوجی، توانائی اور اشیائے صرف کے شعبوں میں کام کرنے والی صف اول کی امریکی کمپنیوں کے سینئر اہلکاروں پر مشتمل یو ایس پاکستان بزنس کونسل کے 26 رکنی تجارتی وفد نے 13 جنوری سے 15 جنوری تک اسلام آباد کا دورہ کیا اور دوطرفہ تجارت اور پاکستان میں امریکی سرمایہ کاری بڑھانے کے لئے ملاقاتیں کیں۔ حکومت پاکستان کی طرف سے وفد کے سربراہ مائلز ینگ ،جو ’’اگلو وی اینڈ ماتھر‘‘ اشتہاری کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں، اور پیپسی کے وائس چیئرمین ڈاکٹر محمود خان کا سرکاری مہمانوں کی حیثیت سے استقبال کیا گیا۔ وفد نے وزیراعظم کی جانب سے دیئے گئے ظہرانے میں بھی شرکت کی اور دیگر اعلیٰ حکام سے بھی ملاقات کی جس میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وزیر تجارت خرم دستگیر خان اور سرمایہ کاری بورڈ کے چیئرمین مفتاح اسماعیل بھی شامل ہیں۔ سفیر ڈیوڈ ہیل نے امریکی سفارت خانہ میں وفد کو خوش آمدید کہتے ہوئے ارکان کے ساتھ پاکستان میں امریکی کمپنیوں کے لئے مواقع اور درپیش چیلنجز سے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ سفیر ڈیوڈ ہیل نے اس موقع پر اپنے خطاب میں دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعلقات بڑھانے کے حوالے سے امریکی عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ اقتصادی روابط پاکستان کے ساتھ امریکی تعلقات کا کلیدی حصہ ہیں اور امریکی حکومت ان تعلقات کو مزید فروغ دینے کے لئے پرعزم ہے تاہم حکومت تن تنہاء اس مقصد کو اس وقت تک حاصل نہیں کر سکتی جب تک نجی شعبہ اس کے ساتھ نہ ہو۔ امریکہ پاکستانی مصنوعات کی بڑی منڈی ہے اور پاکستان کے لئے غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری کا بنیادی ماخذ ہے۔ واشنگٹن میں قائم یو ایس پاکستان بزنس کونسل امریکی چیمبر آف کامرس سے منسلک ہے جس کے قیام کا مقصد پاکستان کے ساتھ اقتصادی روابط کو فروغ دینا ہے۔ اس کے ممبران میں چھوٹی اور درمیانے درجے کی کمپنیوں کے ساتھ ساتھ کثیر الملکی کمپنیاں بھی شامل ہیں جو پاکستان کو اشیاء درآمد کرتی ہیں یا وہاں پر سرمایہ کاری کرتی ہیں۔ چیمبر پاکستان میں نجی شعبہ کی سرمایہ کاری میں فعال کردار ادا کرتا رہا ہے اور لاہور میں امریکن بزنس فورم اور کراچی میں واقع امریکی بزنس کونسل کے ساتھ مل کر کام کرتا ہے۔

مزید : کامرس