لاہور میں آتشزدگی کا سانحہ

لاہور میں آتشزدگی کا سانحہ

لاہور کے ایک گنجان محلہ میں آتشزدگی کا تکلیف دہ سانحہ پیش آیا اس میں ایک ہی گھرانے کے چھ افراد لقمہ اجل بن گئے، آگ اوپر والی منزل پر لگی اور اوپر رہنے والے جان نہ بچا سکے۔ عینی شاہدین کے مطابق تنگ بازار اور گلیوں کی وجہ سے آگ پر قابو پانے میں دقت ہوئی اور چھ گھنٹے کے بعد ہی عملہ اِس قابل ہوا کہ اندر والوں کی مدد کی جاسکی اس وقت تک چھ افراد جل کر اللہ کو پیارے ہو چکے تھے۔ اللہ ان سب کی مغفرت کرے۔یہ پرانے شہر کا مسئلہ ہے ، یہاں محلے داری ہے اور بازار اور گلیاں تنگ ہیں، جبکہ گھروں میں لکڑی کا کام بھی ہوتا ہے تاہم پرانے دور کے مکانوں کی اوپر کی چھتیں قریباً ایک دوسرے سے ملی ہوئی تھیں، ایسی ہنگامی صورت میں چھت کے راستے بھی جایا جا سکتا تھا تاہم اب مکانات خستہ ہونے یا اندرون شہر کاروبار کو وسعت ملی تو پرانے گھروں کی جگہ کئی کئی منزلہ عمارتوں نے بھی لے لی اور چھتوں والا معاملہ بھی نہ رہا، اس کے علاوہ پہلے ان محلوں میں فائر ہائیڈرنٹ بھی ہوتے تھے اور آگ کی صورت میں پانی مل جاتا تھا، بڑی گاڑی کی ضرورت نہیں ہوتی تھی۔اب یہ سہولت معدوم ہو چکی ہے۔حکومتِ پنجاب نے پسماندگان کے لئے امدادی رقم کا اعلان کیا یہ اچھی بات ہے، لیکن ضرورت اِس امر کی ہے کہ مستقبل میں ایسے حادثات سے بچنے کے لئے ٹھوس اقدامات کئے جائیں۔

مزید : اداریہ