چاروں تدریسی ہسپتالوں کے قانونی اور عدالتی معاملات کیلئے مشترکہ لیگل ٹیم کی خدمات حاسل کرنیکا فیصلہ

چاروں تدریسی ہسپتالوں کے قانونی اور عدالتی معاملات کیلئے مشترکہ لیگل ٹیم کی ...

پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا کے چاروں تدریسی ہسپتالوں بشمول لیڈی ریڈنگ ہسپتال،خیبر ٹیچنگ ہسپتال،حیات آباد میڈیکل کمپلیکس اور ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹیوٹ ایکٹ کے نفاذ کے بعد اس پر عملدرآمدکا سلسلہ تیزی سے جاری ہے اور چاروں ہسپتالوں میں مختلف ڈائریکٹرزاورمینجرزسمیت دیگر انتظامی عہدوں پر بھرتیوں کاعمل اگلے مہینے کی15تاریخ تک مکمل کر لیا جائے گا جبکہ ان ہسپتالوں کے تمام انتظامی،طبی اور مالی معاملات کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا کام اپریل کے مہینے سے شروع کیاجائے گا جس کیلئے شوکت خانم ہسپتال میں استعمال ہونے والا سافٹ ویئر استعمال کیا جائے گا۔یہ بات جمعہ کے روز سینئر صوبائی وزیر صحت شہرام تراکئی کی زیر صدارت ان ہسپتالوں کے بورڈز آف گورنرزکے ایک اجلاس میں بتائی گئی جس میں ان ہسپتالوں کے بورڈز آف گورنرزکے سربراہوں اور دیگر ممبران کے علاوہ سیکرٹری صحت ڈاکٹر جمال یوسف اور محکمے کے دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی۔اجلاس میں ان چاروں ہسپتالوں میں میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹیوٹ ایکٹ کے تحت تمام انتظامی امور خصوصاً نئی بھرتیاں،قواعد و ضوابط اور دیگر تمام معاملات میںیکسانیت لانے پر اتفاق کیا گیا اس کے علاوہ ان ہسپتالوں کے مختلف انتظامی عہدوں میں بھرتیوں کیلئے بنائی گئی سلیکشن کمیٹیوں میں صوبے سے باہر کسی مستند طبی ادارے سے تعلق رکھنے والے ایک ماہر شخص کو بطور آبزرور شامل کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا تاکہ بھرتیوں کے عمل کو ہر لحاظ سے صاف اور شفاف بنایاجاسکے۔اجلاس میں چاروں تدریسی ہسپتالوں کے قانونی اور عدالتی معاملات کو دیکھنے کیلئے ایک مشترکہ لیگل ٹیم کی خدمات حاصل کرنے کا بھی فیصلہ کیاگیا۔صوبائی وزیر نے بورڈز آف گورنرز پر زور دیا کہ وہ ان ہسپتالوں کی مکمل خود مختاری کے لئے منظور کردہ قانون پر عملدرآمدکی رفتارکو مزید تیزکریں تاکہ ا س کے ثمرات جلد سے جلد عوام تک پہنچ سکے۔انہوں نے ہسپتالوں میں صفائی و ستھرائی کے معاملات کو ترجیحی بنیادوں پر ٹھیک کرنے پر بھی زور دیا۔ صوبائی وزیر نے بورڈز آف گورنرزکو یقین دلایاکہ صوبائی حکومت انہیں ان ہسپتالوں کے معاملات کو درست کرنے کیلئے ہر ممکن تعاو ن فراہم کرے گی

مزید : پشاورصفحہ اول