انتہاءپسند اسرائیلی وزیراعظم نے مساجد میں اذانوں پر پابندی کی راہ ہموار کرنے کیلئے اذانوں ، مساجد کیخلاف زہر اگلنا شروع کردیا

انتہاءپسند اسرائیلی وزیراعظم نے مساجد میں اذانوں پر پابندی کی راہ ہموار ...
انتہاءپسند اسرائیلی وزیراعظم نے مساجد میں اذانوں پر پابندی کی راہ ہموار کرنے کیلئے اذانوں ، مساجد کیخلاف زہر اگلنا شروع کردیا

  

مقبوضہ بیت المقدس (این این آئی)انتہاءپسند اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے فلسطین کی مساجد میں اذانوں پر پابندی کی راہ ہموارکرنے کےلئے اذانوں اور مساجد کےخلاف زہراگلنا شروع کردیا۔بنجمن نیتن یاھو نے حکمران جماعت’لیکوڈ‘ کے پارلیمانی بلاک کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینی علاقوں میں چپے چپے پر موجود مساجد اور وہاں سے بلند ہونےوالی اذانیں شوروغوغا ، یہودی شہریوں کے آرام وسکون میں خلل کا باعث بن رہی ہیں۔نیتن یاھو نے کہا کہ فلسطینی عرب آبادی والے علاقے ریاستی قانون پرعملدرآمد نہیں کرتے، وہ دھڑا دھڑ مسجدیں بنانے کےساتھ لاو¿ڈ سپیکروں کے ذریعے اذان دینے پر مصر ہیں جس کے نتیجے میں یہودی شہریوں کے آرام و سکون میں خلل پیدا ہو رہا ہے۔اسرائیلی وزیراعظم نے فلسطینیوں کی خانگی اور عایلی روایات کو بھی ہدف تنقید بنایا اور کہا کہ فلسطینی آبادیوں میں شادیوں سے متعلق قوانین کی بھی کوئی ریاعت نہیں رکھی جاتی۔مساجد کےخلاف زہر افشانی کرتے ہوئے نیتن یاھو نے کہا کہ کسی مذہبی گروپ کو دوسروں کی زندگیوں کو خلل میں ڈالنے کا کوئی جواز نہیں۔ فلسطینیوں کی مساجد سے گونجنے والی اذان کی اوازیں یہودیوں کے سکون میں خلل پیدا کرتی ہیں، جسے کسی صورت میں قابل قبول قرار نہیں دیا جاسکتاہے۔

مزید : بین الاقوامی