ہوٹلوں میں کام کرنے والے ملازمین نے ایسے راز بتادئیے کہ جان کر آپ بھی اگلی مرتبہ ٹھہرنے سے پہلے بار باردیکھیں گے

ہوٹلوں میں کام کرنے والے ملازمین نے ایسے راز بتادئیے کہ جان کر آپ بھی اگلی ...
ہوٹلوں میں کام کرنے والے ملازمین نے ایسے راز بتادئیے کہ جان کر آپ بھی اگلی مرتبہ ٹھہرنے سے پہلے بار باردیکھیں گے

  

نیویارک(نیوزڈیسک)ہم زندگی میں کبھی نہ کبھی سفر کرتے ہیں تو ہوٹل میں رہنے کا اتفاق ہوتا ہے۔یہ دیکھ کر خوشی ہوتی ہے کہ ہوٹل میں صفائی کے انتظامات بہت اچھے ہیں لیکن اس صفائی میں کیا کیا راز چھپے ہوتے ہیں کہ اگر آپ کو علم ہوجائے تو آپ دوبارہ ہوٹل میں کبھی بھی قیام نہیں کریں گے۔

ایک ایپWhisperکے ذریعے ہوٹل کے ملازمین سے پوچھا گیا کہ وہ کام کے دوران کیا کیا کرتے ہیں اور کس طرح سے صفائی اور دیگر باتوں کو دیکھتے ہیں۔چونکہ ایپ میں کسی بھی ملازم کی شناخت نہ بتائی گئی تھی اس لئے کچھ لوگوں نے ایسی باتیں بتائیں کہ سننے والے کانوں کو ہاتھ لگانے لگے۔ہوٹل کی صفائی ،ریسٹورنٹ اور فرنٹ ڈیسک سے تعلق رکھنے والے افراد کا کہنا تھا کہ اگر کوئی مہمان ان سے برا سلوک کرے تو وہ پھر اسے سبق سکھانے کی ٹھان لیتے ہیں اور اس طریقے سے بدلا لیتے ہیں کہ مہمان کو علم ہی نہیں ہوپاتا اور وہ گندگی میں رہتے ہوئے بھی خود کو صاف محسوس کرتا ہے۔ایک صفائی کرنے والی خاتون کاکہنا تھا کہ وہ روزانہ بستر کی چادریں نہیں بدلتی بلکہ پرانی پر ہی ویکیوم سے صفائی کرکے اسے سیدھا کرتی ہے،تکیوں کو درست کرتی ہے اور کمرے میں رہنے والا سمجھتا ہے کہ بیڈشیٹ نئی اور تبدیل شدہ ہے۔اکثر صفائی والی خواتین نے اس بات کا اقرار کیا کہ وقت بچانے کے لئے وہ بھی ایسا ہی کرتی ہیں اور کبھی بھی نہیں پکڑی جاتیں۔ایک اور ملازم کاکہنا تھا کہ ان کے ہوٹل میں کمبل سال میں صرف ایک بار دھلتے ہیں اور بقیہ وقت انہیں جھاڑ کر ہی کام چلایا جاتا ہے۔فرنٹ ڈیسک سٹاف کا کہنا تھا کہ اگر کوئی مہمان ان سے بدتمیزی کرے تو چیک ان کرتے وقت وہ انہیں ہوٹل کا بدترین کمرہ دیتے ہیں اور اگر مہمان تمیز سے پیش آئے تو وہ بہترین کمرہ بھی دینے سے دریغ نہیں کرتے۔روم سروس دینے والے ایک شخص کا کہنا تھا کہ وہ کبھی بھی گھر سے کھانا نہیں لاتا کیونکہ جب وہ کسی کے کمرے میں کھانا دیتے ہیں تو وہ دینے سے قبل پلیٹ سے ہی کھالیتا ہے۔ایک ہوٹل ملازم کا تو یہاں تک کہنا تھا کہ وہ جس ہوٹل میں کام کرتا ہے وہاں مرے ہوئے کیڑے تک صاف نہیں کئے جاتے اور عمارت اس قدر پرانی ہے کہ صفائی رکھنا ہی ایک ناممکن کام ہے۔ایک اور کا کہنا تھا کہ وہ مہمانوں کے کمروں کے اندر کی آوازیں سننے کے لئے بھی بہت کوشش کرتے ہیں اور انہیں کامیابی بھی ہوتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس