30 ڈالر کو بھول جائیں، دنیا کا وہ علاقہ جہاں تیل 8 ڈالر فی بیرل میں فروخت ہورہا ہے، یہ کونسی جگہ ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

30 ڈالر کو بھول جائیں، دنیا کا وہ علاقہ جہاں تیل 8 ڈالر فی بیرل میں فروخت ہورہا ...
30 ڈالر کو بھول جائیں، دنیا کا وہ علاقہ جہاں تیل 8 ڈالر فی بیرل میں فروخت ہورہا ہے، یہ کونسی جگہ ہے؟ جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

  

اوٹاوا (مانیٹرنگ ڈیسک) اکثر لوگ اس بات پر حیران ہورہے ہیں کہ تیل کی قیمت 30ڈالر فی بیرل تک گر چکی ہے، جو کہ 12 سال کی کم ترین قیمت ہے، تو شاید یہ لوگ اس بات پر یقین کرنے کو تیار نہ ہوں کہ کینیڈا میں خام تیل کی قیمت 8 ڈالر فی بیرل ہو چکی ہے۔

نیوز سائٹ oilprice.com کے مطابق اگرچہ 30 ڈالر فی بیرل بھی 12 سال کی کم ترین قیمت ہے مگر کینیڈا کی خام تیل فروخت کرنے والی کمپنیوں کے لئے یہ قیمت بھی خواب بن گئی ہے۔ البرٹا کے خطے سے نکلنے والے خام مادے بائی ٹیومن (جس سے خام تیل حاصل کیا جاتا ہے) کی فروخت رواں ہفتے تقریباً 8 ڈالر فی بیرل تک آگئی۔ نیوز سائٹ کے مطابق ایمزون ویب سائٹ پر تیل کا خالی ڈرم بھی 78 ڈالر میں بیچا جارہا ہے، یعنی کینیڈا میں خام تیل کے ایک ڈرم سے ایمزون پر ملنے والے خالی ڈرم کی قیمت تقریباً 8 گنا زیادہ ہے۔

مزید جانئے: وہ ملک جسے تیل کی گرتی قیمتوں اور دوسرے ملکوں پر چڑھائی کے شوق نے کہیں کا نہ چھوڑا، سب سے بڑا خطرہ!

خام تیل کی قیمت اس حد تک گرنا کینیڈا کی کمپنیوں کے لئے مسئلہ ہی نہیں بلکہ ان کی بقاءکے لئے خطرہ بن گیا ہے۔ متعدد کمپنیاں خام تیل کی قیمت میں اس قدر کمی کے بعد کاروبار بند کرنے پر مجبور ہورہی ہیں۔ دوسری جانب ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ تیل نکالنے والی کمپنیوں کی بندش صرف ایک حد تک ہی ممکن ہے کیونکہ تیل کے کنویں بند کرنے سے زیر زمین ذخائر کو نقصان پہنچتا ہے اور بعدازاں یہاں سے نکلنے والے تیل کی مقدار کم ہوجاتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ خام تیل کی پیداوار بڑی حد تک جاری رہے گی اور قیمتوں میں مزید کمی کا باعث بنے گی۔

مزید : بین الاقوامی