اس تصویر میں تمام موٹر سوار اس طرح کیوں کھڑے ہیں اور درمیان میں سے کیوں نہیں جارہے؟وجہ ایسی کہ آپ کو اپنے ملک کے ڈرائیورز پر غصہ آئے گا‎

اس تصویر میں تمام موٹر سوار اس طرح کیوں کھڑے ہیں اور درمیان میں سے کیوں نہیں ...
اس تصویر میں تمام موٹر سوار اس طرح کیوں کھڑے ہیں اور درمیان میں سے کیوں نہیں جارہے؟وجہ ایسی کہ آپ کو اپنے ملک کے ڈرائیورز پر غصہ آئے گا‎

  

برلن(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان میں ڈائیورز اکثر اوقات ٹریفک قوانین کی پاسداری کرتے ہوئے نظر نہیں آتے اور صرف وہیں پر قوانین کی پاسداری دیکھنے میں آتی ہے جہاں پولیس کھڑی ہو ،اس کے علاوہ اگر کہیں کسی وجہ سے ٹریفک رک جائے تو انتظار کرنے کی بجائے کسی نہ کسی طرح جلد ازجلد منزل تک پہنچنے کیلئے ’رانگ وے ‘کا استعمال بھی عمومی طورپر نظر آتاہے۔

جرمنی ایک ایسا ملک ہے جہاں اگر کبھی کسی وجہ سے ٹریفک رک جائے یاآہستہ چل رہی ہو تو قانون کے مطابق ڈائیورز اس چیز کے پابند ہیں کہ وہ اپنی گاڑیاں دائیں اور بائیں جانب رکھیں اور درمیان میں ایک گاڑی کے گزارنے کیلئے جگہ خالی چھوڑدی جاتی ہے تاکہ خالی چھوڑی جانے والی جگہ سے ایمبولنس یا ایمرجنسی گزرنے والے آرام سے بغیر رکے گزر سکیں۔مذکورہ تصویر میں دیکھا جاسکتاہے کہ تمام افراد اپنی گاڑیاں دائیں اور بائیں جانب رکھتے ہوئے ٹریفک کی روانی کاانتظار کر رہے ہیں اور قانون کی خلاف ورزی نہیں کی جارہی ہے۔

ایسی صورت میں اگر کہیں کوئی حادثہ پیش آ جائے یا ایمبولینس میں کوئی مریض انتہائی تشویشناک حالت میں ہو تو اسے جلد از جلد ہسپتال پہنچانے میں آسانی پیدا ہوتی ہے اور سیکیورٹی فورسز بھی کسی بھی قسم کے ناخوشگوار حالات سے نمٹنے کیلئے فوری طور پر مذکورہ مقام پر پہنچ سکتی ہے ۔

جرمنی کے شہری دنیامیں پڑھی لکھی قوموں میں سے ایک ہیں کیونکہ جرمنی کا رقبہ تقریباً پاکستان سے آدھا ہے لیکن جرمنی میں ساڑھے تین سو سے زائد یونیورسٹیاں ہیں، حکومت کا مقصد شہریوں کو تعلیم کے ذریعے باشعور بناناہے تاکہ ہر شہری قانون کو سمجھے اور قانون کی پاسداری کو یقینی بنائے اور یہ تعلیم کے بغیر ممکن نہیں ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس