چودھری ضیاء اللہ سائیں ہنجرا

چودھری ضیاء اللہ سائیں ہنجرا

شیر میسور سلطان فتح علی المعرف ٹیپو سلطان کے غیرت و حمیت پر مبنی الفاظ ’’ شیر کی ایک دن کی زندگی ، گیدڑ کی سو سالہ زندگی سے بہتر ہے ‘‘ 4 مئی 1799 ء کو شہید ہونے والے ٹیپو سلطان کی شہادت کو 220 برس ہو گئے ہیں، لیکن رہتی دنیا تک نوع انسانی اس مرد قلندر کو کبھی بھلا نہ پائے گی۔ ٹیپو سلطان سپر ا جٹ تھے ۔

قیام پاکستان کے بعد نارنگ منڈی ضلع شیخوپورہ سے تعلق رکھنے والے ہنجرا جٹ قبیلے سے تعلق رکھنے والے دبنگ مرد چودھری نواب خان ہنجرا کے پوتے چودھری ضیاء اللہ المعروف سائیں ہنجرا مرحوم بھی غیر ت ، حمیت ، عزتوں کا محافظ ، اعلیٰ اقدار ،مظلوموں کا ہمدرد جرأت و بہادری میں شہید ٹیپو سلطان کا ثانی تھا ۔ 16 جنوری 2001 ء کو 38 برس عمر پا کر دنیا سے کوچ کرنے والے چودھری ضیاء اللہ سائیں ہنجرا کو 18 برس بیت گئے، لیکن آج تک اس غیرت مند شخص کی عوام میں عقیدت رورز وشن کی طرح قائم دائم ہے ۔

چودھری ضیاء اللہ سائیں ہنجرا زمیندار گھرانے سے تعلق رکھتے تھے غریبوں کے ہمدرد اور ان کی مدد کو اپنا اخلاقی فریضہ سمجھتے تھے ان کی زندگی میں دور دور دیہاتوں تک کسان اپنی اجناس کو کھیتوں میں ہی چھوڑ کر بے فکر ہو کر گھروں کو چلے جاتے تھے کہ ضیاء اللہ سائیں ہنجرا کے ہوتے ہوئے کسی کی جرأت نہیں کہ ان کی اجناس کو کوئی اٹھا کر لے جائے ۔

وہ دوستی دشمنی کے آداب کو ہمیشہ ملحوظ خاطر رکھتے تھے خواتین کا بے پناہ احترام کرتے تھے چھوٹے بچوں ، بچیوں حتی ٰ کہ بڑوں کو بھی سر پر پیار ان کا زندگی بھر شیوہ رہا ۔ مشکل حالات میں بھی صبر و استقامت کا دامن نہیں چھوڑا ، اللہ غریق رحمت کرے عجب آزاد مرد تھا۔

مزید : رائے /کالم