حکومت کے2023وژن میں سود خاتمہ شامل نہ ہونا قابل افسوس ،سراج الحق

حکومت کے2023وژن میں سود خاتمہ شامل نہ ہونا قابل افسوس ،سراج الحق

اسلام آباد(آئی این پی ) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ اسلامی معاشی نظام کے بغیر اسلامی طرز زندگی ناممکن ہے، حکومت کے 2023 وژن میں سود کا خاتمہ شامل نہ ہونا قابل افسوس ہے،چار ماہ میں دو ہزار دو سو چالیس ارب روپے کا قرضہ لیا گیا ، سود کی وجہ سے معیشت شیطانی چکر میں پھنس چکی ہے، قومی اسمبلی کے ماتھے پر کلمے کا تقاضا ہے کہ سودی نظام کا خاتمہ کیا جائے۔ وفاقی شرعی عدالت میں سودی نظام کے خلاف مقدمہ کی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کے عوام کی طرف سے سودی نظام کے خلاف قانونی و عدالتی جنگ لڑ رہے ہیں جب آئین کا آرٹیکل 138 رباہ پر پابندی عائد کرتا ہے، اسلامی معاشی نظام کے بغیر اسلامی طرز زندگی ناممکن ہے۔ 1992 میں وفاقی شرعی عدالت نے سود کے خاتمے کا فیصلہ دیا جس پر عوام نے خراج تحسین پیش کیا لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ سپریم کورٹ نے دوبارہ نظرثانی کے لئے کیس شرعی عدالت بھیج دیا۔ ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ملک سے سود کا خاتمہ کرے کیونکہ یہ آئینی تقاضا ہے۔

سراج الحق

مزید : صفحہ آخر