سینئر وزیر نے پشاور میں فیمیل یوتھ سنٹر کے قیام کی منظوری دیدی

سینئر وزیر نے پشاور میں فیمیل یوتھ سنٹر کے قیام کی منظوری دیدی

پشاور( سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر برائے امور نوجوانان ، سیاحت، ثقافت، کھیل اور آثار قدیمہ محمد عاطف خان نے پشاور میں فیمیل یوتھ سنٹر کے قیام کی منظوری دے دی ہے۔فیمیل یوتھ سنٹر حیات آباد میں 42 ملین روپے کی لاگت سے بنایا جائیگا۔یوتھ سنٹرمیں جیم،یوگا،سٹیٹ آف آرٹ تھیٹر، روف ٹاپ کیفے،چلڈرن پلے ایریا،ٹیبل اینڈ بورڈ گیمز اور ورچوئل ای گیمز کی سہولیات فراہم کی جائینگی۔یہ منظوری سینئر وزیر نے یوتھ ڈویلپمنٹ کمیشن کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے دی۔اس موقع پر ایڈیشنل سیکرٹری بابر خان اورڈائریکٹر یوتھ افئیرز اسفندیار خٹک سمیت کمیشن کے ممبران بھی موجود تھے۔اجلاس میں خصوصی افراد کے لئے یوتھ کارنیوال میں وھیل چئیر ریس اور آرچری گیم خصوصی طور پر شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اجلاس میں نوجوانوں میں کتابیں پڑھنے کے رجحان کو دوبارہ بحال کرنے کے لئے ''بکس آن وہیکل'' کے نام سے نئی سکیم کی منظوری بھی دی گئی۔نئی سکیم کے مطابق محکمہ امور نوجوانانا کا نیشنل بک فاونڈیشن سے کتابیں لے کر سکولوں اور کالجوں میں تقسیم کرے گا۔اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آئس نشے کے خلاف کالجز اور یونیورسٹیوں کی سطح پر بھرپور آگاہی مہم چلائی جائیگی تاکہ نوجوانوں کو اس لعنت سے بچایا جاسکے۔۔سینئر وزیر نے یوتھ ڈویلپمنٹ کمیشن میں ایبٹ آباد سے تعلق رکھنے والی کومل خان کو شامل کرکے خصوصی افراد کو بھی کمیشن میں نمائندگی دی۔اسکے علاوہ ولادی میر پیوٹن صدارتی ایوارڈ یافتہ ڈینئل حیات کو بھی کمیشن میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔سینئر وزیر نے اس موقع پر محکمہ یوتھ افیئرزکے حکام کو مار چ میں ہونے والے یوتھ کارنیوال کے لئے تمام تر تیاریاں مکمل کرنے اور قبائیلی اضلاع کے نوجوانوں کو بھرپور نمائندگی دینے کی ہدایت کی۔

مزید : کراچی صفحہ اول