پی کے ایل آئی کیس، سپریم کورٹ کا ڈی جی اینٹی کرپشن کو 2 ہفتے میں تحقیقاتی رپورٹ پیش کرنے کا حکم

پی کے ایل آئی کیس، سپریم کورٹ کا ڈی جی اینٹی کرپشن کو 2 ہفتے میں تحقیقاتی ...
پی کے ایل آئی کیس، سپریم کورٹ کا ڈی جی اینٹی کرپشن کو 2 ہفتے میں تحقیقاتی رپورٹ پیش کرنے کا حکم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے پی کے ایل آئی کیس میں ڈی جی اینٹی کرپشن کو دو ہفتے میں تحقیقاتی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا،عدالت نے ریمارکس دیئے ہیں ڈی جی اینٹی کرپشن فریقین کے اعتراضات کا جائزہ لیںاوراعتراضات کا جائزہ لےکر مزیدتحقیقات کریں ۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے پی کے ایل آئی سروس سٹرکچر سے متعلق کیس کی سماعت کی،وکیل نعیم بخاری نے عدالت کو بتایا کہ ٹھیکیداراپنے 1.2 ارب روپے واپس لیناچاہتا ہے،حیرانی ہے کیسے ٹھیکے کوزائدنرخ قراردیاگیا؟،نعیم بخاری نے کہا کہ منصوبے کو مکمل ہونے دیا جائے ۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہم تو چاہتے ہیں منصوبہ مکمل ہو ،عدالت چاہتی ہے پی کے ایل آئی جلد فعال ہو ،سنا ہے رواں ماہ جگر کی پہلی پیوندکاری ہو گی اورجون سے باضابطہ ادارہ فعال ہو گا۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اینٹی کرپشن اپنی کارروائی جاری رکھے گا،ریکارڈ کے مطابق مقدمے ہوتے ہیں تو کئے جائیں ،اگرکسی کو اینٹی رپورٹ پر اعتراض ہے تو پیش کریں،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ٹرائل میں صفائیاں پیش کرکے بری ہو جائیں گے ،اینٹی کرپشن کی رپورٹ کو نظرانداز نہیں کر سکتے ۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ اینٹی کرپشن عبوری رپورٹ پر حتمی انکوائری کریگا ،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ حسین اصغر جیسے آفیسر ہمارے ہیرو ہیں۔ڈی جی اینٹی کرپشن فریقین کے اعتراضات کا جائزہ لیں اوراعتراضات کا جائزہ لے کر مزید تحقیقات کریں ،عدالت حکم دیا کہ حسین اصغر دو ہفتے میں تحقیقاتی رپورٹ عدالت میں پیش کریں ۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد