لمبی زندگی کے لیے دن بھر میں 30 منٹ اس کام کے لیے نکال لیں

لمبی زندگی کے لیے دن بھر میں 30 منٹ اس کام کے لیے نکال لیں
لمبی زندگی کے لیے دن بھر میں 30 منٹ اس کام کے لیے نکال لیں

  

لندن (ویب ڈیسک) آپ کو کسی مہنگے جم کی رکنیت یا صحت مند ہونے کے لیے دیر تک دوڑنے کی ضرورت نہیں بلکہ بس اپنے بیٹھنے کا وقت آدھا گھنٹہ کم کرلیں۔جی ہاں یہ لمبی زندگی کا وہ راز ہے جو ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آیا ہے۔اس سے پہلے متعدد طبی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آچکی ہے کہ بہت زیادہ وقت بیٹھ کر گزارنا متعدد طبی مسائل جیسے خون کی شریانوں سے جڑے امراض، قبل از وقت بڑھاپا، گردوں کی بیماریوں اور دیگر کا باعث بنتا ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق ایک نئی تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ دن بھر میں بیٹھ کر گزارے جانے والے وقت کے محض 30 منٹ کسی بھی قسم کی ہلکی جسمانی سرگرمی سے بدل دینا لمبی زندگی کے حصول میں مدد دے سکتا ہے۔ایسی ہلکی سرگرمیاں جیسے چہل قدمی یا اپنی نشست سے اٹھ کر گھر میں ہی گھوم لینا قبل از وقت موت کا خطرہ 17 فیصد تک کم کردیتا ہے۔اتنے دورانیے میں تیز چہل قدمی یا کچھ سخت ورزش سے قبل از وقت موت کا خطرہ 35 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔

تحقیق کے مطابق بیشتر افراد کے لیے ورزش کرنا بہت مشکل کام محسوس ہوتا ہے مگر یہ ثابت ہوا ہے کہ گھنٹوں کی جسمانی سرگرمی کی ضرورت نہیں بلکہ چہل قدمی سے بھی اب بہت کچھ حاصل کرسکتے ہیں۔یقیناً ورزش کے اپنے فوائد ہیں مگر زیادہ وقت بیٹھ کر گزارنے والوں کے لیے ہلکی جسمانی سرگرمی بھی اس عادت کے منفی اثرات کم کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔یعنی اس تحقیق کے دوران 8 ہزار صحت مند افراد کے ڈیٹا کاجائزہ لیا گیا اور ان کی جسمانی سرگرمیوں کے لیے ٹریکرز کی مدد لی گئی۔

اس ڈیٹا کے ذریعے محققین نے یہ جاننے کی کوشش کی کہ سست طرز زندگی اور متحرک رہنے سے جسم پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں۔اس تحقیق کے نتائج طبی جریدے امریکن جرنل آف Epidemiology میں شائع ہوئے۔

مزید : تعلیم و صحت