گورنر راج کا امکان نہیں ، سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے :فواد چودھری نے اپوزیشن کے اتحاد کو ”ریسٹوریشن آف کرپشن “قراردیدیا

گورنر راج کا امکان نہیں ، سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے :فواد چودھری نے ...
گورنر راج کا امکان نہیں ، سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے :فواد چودھری نے اپوزیشن کے اتحاد کو ”ریسٹوریشن آف کرپشن “قراردیدیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اطلاعات و نشریا ت فواد چودھری نے کہاہے کہ سندھ میں گورنر راج کاامکان نہیں، اتحادیوں کے تعاون سے آئینی تبدیلی لائیں گے ،آصف زرداری کا سیاسی کیرئیر اختتام کے قریب ہے ،پہلے چھو منتر سے فنڈز دبئی چلے جاتے تھے ، اب یہیں خرچ ہونگے۔

تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری نے کہا کہ کراچی کیلئے عملی اقدمات کئے جائیں گے اور مسائل کے کیلئے منصوبہ بنایا جائیگا ، اتحادی جماعتوں کے تعاون سے سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے ۔وزیر اعظم کا دورہ سندھ ابھی فائنل نہیں ہوا ،یہ فیصلہ ابھی ہوگا کہ وزیر اعظم کب کراچی کا دورہ کریں گے ، انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم کے رہنماﺅں سے بات ہوئی ہے اور رپورٹ وزیر اعظم کوبھیجی گئی ہے ، سندھ میں گورنر راج کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ، تھر ہو یا کراچی یہ پاکستان کے حصے ہیں، پہلے چھو منتر سے فنڈز دبئی چلے جاتے تھے ، اب یہیں خرچ ہونگے ۔

انہوں نے کہا کہ سندھ میں جو تبدیلی آئیگی ، وہ قانون کے مطابق ہی آئیگی ، پیپلز پارٹی کا کراچی میں کو مستقبل نہیں ہے ، اتحادیوں کے تعاون سے سندھ میں آئینی تبدیلی لائیں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ کل ریسٹوریشن آف کرپشن ہواہے ، اسمبلی میں اپوزیشن نے بدعنوانی کی بحالی کا اتحاد بنایاہے ۔ انہوں نے کہا کہ آصف زرداری کا سیاسی کیریئر اختتام کے قریب ہے، چاہتے ہیں کہ پیپلز پارٹی خود مرادعلی شاہ کو تبدیل کرے ، کراچی کے مسائل پر ایجنڈے کے مطابق پیش رفت ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ جو حال پنجاب میں ن لیگ کا ہوا ہے ، وہی اب سندھ میں پیپلزپارٹی کا ہونے جارہاہے ، پیپلز پارٹی کے ممبران کے تعاون سے اور ان لوگوں کے تعاون سے جو لوگ تبدیلی چاہتے ہیں ، سندھ میں آئینی تبدیلی لے کر آئیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر پیپلز پارٹی اگر خود مراد علی شاہ کو نہیں ہٹاتی تو وزیراعظم فیصلہ کریں گے کہ غبارے سے ہوا کب نکالنی ہے ، کراچی میں ملاقاتوں سے مراد علی شاہ کے جانے کی بنیاد رکھ دی ہے ۔

مزید : اہم خبریں /قومی